کونٹور گلوبل نے روانڈا میں کیوو واٹ الیکٹریسٹی پروجیکٹ کے پہلے مرحلے کے لیے قرضہ جات کے معاہدے پر دستخط کر دیے، اہم تعمیراتی سنگ میل کا جشن

Asianet 46059

نیو یارک، لندن، دی ہیگ اورتونس، تونس، 26 اگست/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

– پہلے منصوبے کی طویل المیعاد سرمایہ کاری، گیس نکالنے والے جہاز کا اجراء اور پاور پلانٹ کا سنگ بنیاد

کونٹور گلوبل نے آج اعلان کیا ہے کہ اس نے کیبویے، روانڈا میں جھیل کیوو سے میتھین گیس کے اخراج اور 25 میگاواٹ کے پاور پلانٹ کی پیداواری تنصیب کے لیے ادارے کے کیووواٹ منصوبے کے لیے ایمرجنگ افریقہ انفرااسٹرکچر فنڈ، نیدرلینڈز ڈیولپمنٹ فنانس کمپنی (ایف ایم او)، افریقن ڈیولپمنٹ بینک، بیلجین انوسٹمنٹ کمپنی فار ڈیولپنگ کنٹریز این وی/ایس اے (بی آئی او) کے ساتھ 91.25 ملین ڈالرز کے قرضے کے معاہدے پر دستخط کر دیے ہیں۔ مشترکہ پروجیکٹ جھیل کیوو کی تہہ میں موجود خطرناک میتھین گیس کو نکالے گا اور اس پر عمل کاری کرے گا تاکہ انتہائی ضروری بجلی کو روانڈا کی انرجی، واٹر اینڈ سینی ٹیشن اتھارٹی (EWSA) کو فروخت کیا جائے۔ ای ڈبلیو ایس اے روانڈ  کا بجلی کا قومی ادارہ ہے، جہاں اس وقت ملک کی بیشتر آبادی بجلی تک رسائی نہیں رکھتی۔

قرضہ جات کے معاہدے پر دستخط آج کیووواٹ کی پروجیکٹ سائٹ پر ہوئے،، جہاں نکالی گئی گیس کو محفوظ کرنے والے 750 ٹن کے بحری جہاز اور پاور  پلانٹ کے سنگ بنیاد کا جشن بھی منایا گیا۔ تقریب مین کونٹور گلوبل، قرضہ دینے والے اداروں، منصوبے کے ٹھیکیدار بشمول فن لینڈ کے وارٹسیلا بھی شامل تھے جو بجلی پیدا کرنے والے انجن تیار کرے گا اور پاور پلانٹ تعمیر کرے گا۔ شرکاء میں روانڈ کی ممتاز شخصیات بھی تھی جن میں کارونگی کے میئر کایومبا برنارڈ، روانڈا کے مربی صوبے کے گورنر سیلسٹن کاباہیزی اور روانڈا کے وزیر برائے توانائی و آب کولیتھا روہامیا شامل تھے۔ اس موقع پر روانڈا میں غیر ملکی سفارت خانوں کے نمائندے بھی موجود تھے جن میں کیگالی میں امریکی سفارت خانے کی چارج ڈی افیئرز اینی کیپسر اور روانڈا میں ولندیزی سفارت خانے کے سفیر فرانس ماکن نے شامل تھے۔

اس مقامی ایندھن کو نکال کے، جو جھیل کیوو کے گہرے پانی میں شامل زیر آب میتھین پر مشتمل ہے، کیوو واٹ پروجیکٹ روانڈا کی تیزی سے ابھرتی ہوئی معیشت کو چلانے کے لیے درکار بجلی کے اخراجات کو کافی کم کرے گا۔ یہ ملک میں گیس کے بڑے پیمانے پر پہلے استعمال کا بھی نمائندہ ہوگا،جس کا اخراج جھیل میں سے گیسوں کے اخراج کے قدرتی عمل سے ماحول کو درپیش خطرات کو بھی کم کرے گا اور ساتھ ساتھ بجلی کی پیداوار کا ماحول دوست ذریعہ بھی فراہم کرے گا۔

25 میگاواٹ کا یہ پاور پلانٹ کیووواٹ منصوبے کا پہلا مرحلہ ہے، جو بین الاقوامی ترقیاتی کمیونٹی کی جانب سے زبردست مدد سپورٹ حاصل کر چکا ہے، جس کا اظہار آج کے قرضہ جاتی معاہدے پر دستخط کے ساتھ ساتھ مئی 2011ء میں ورلڈ بینک گروپ کی ملٹی لیٹرل انوسٹمنٹ ایجنسی کے ساتھ پولیٹکل رسک انشورنس پالیسی پر عملدرآمد بھی ہے۔ پہلا مرحلہ، جس کی تکمیل پر تقریباً 142 ملین ڈالرز کے اخراجات ہوں گے، میں وسیع ماحولیاتی تحقیق اور اجازت کی سرگرمیاں بھی شامل ہیں، جو سب کی سب عالمی بینک کے سخت معیارات کے مطابق ہوں گی، اور اس کے بعد تین مزید مرحلے ہوں گے جن کے نتیجے میں کل پیداوار 100 میگاواٹ تک جا پہنچے گی۔

کونٹور گلوبل کے صدر اور چیف  ایگزیکٹو آفیسر جوزف سی برانڈٹ نےکہا کہ “آج کا اہم سنگ میل کونٹورگلوبل کو کیووواٹ پروجیکٹ کی جلد از جلدتکمیل کے لیے درست طریق پر گامزن کرے گا۔ ہم اپنے مالیاتی شراکت داروں ای اے آئی ایف، ایف ایم او اور اے ایف ڈی بی کی قیادت اور تخلیق کو قدر کرتے ہیں، اور ہمیں فخر ہے کہ حکومت روانڈا ملک کے توانائی کے تحفظ میں اہم حصے کے لیے ہم پر اعتماد کیا۔”

اےایف ڈی بی کے روانڈا میں ریزیڈنٹ نمائندے نیگاتو میکونن نے کہا کہ افریقی ترقیاتی بینک اس سودے بازی میں شمولیت پر فخر محسوس کرتے ہیں۔ جناب میکونن نے زور دیا کہ “کیووواٹ پروجیکٹ بجلی کی سستی فراہمی میں بہتر بھروسہ مندی دے گا جو روانڈا میں دیہی آبادی اور کاروباری اداروں کے لیے بجلی تک رسائی میں اضافہ کرے گی۔”

ای اے آئی ایف کے چیئرمین ٹونی لی نے کہا کہ “کیووواٹ پروجیکٹ بجلی کی پیداوار کی تاریخ کے جدید ترین منصوبوں میں سے ایک ہے۔ ای اے آئی ایف خوش ہےکہ قرضے کے ذریعے سرمایہ فراہم کرنے میں اس کا کردار جھیل کیوو میں گیس کے قابل تجدید ذخائر کو نکالنا ممکن بنائے گی جس سے روانڈا اور وہاں کے باشندوں کو فائدہ ہوگا۔”

ایف ایم او کے ڈائریکٹر انرجی اینڈ ہاؤسنگ ہوب کورنیلسن نے کہا کہ “ایف ایم او روانڈا میں بجلی کی اضافی پیداوار کے لیے اس منصوبے پر یقین رکھتی ہے جو قابل تجدید گیس کے ذخائر کو استعمال کرے گا اور روانڈا میں معاشی و سماجی ترقی میں مدد دے گا۔ ایف ایم او اس جدید منصوبے کے لیے سرمایہ کاری فراہم کرنے میں شریک کاکردار ادا کرنے پر بہت خوش ہے، جو ترقی پذیر مارکیٹوں میں نجی شعبے کو مدد فراہم کرنے کے ایف ایم او کے مشن سے مکمل مطابقت رکھتا ہے۔”

کونٹور گلوبل کے بارے میں

کونٹور گلوبل بجلی و توانائی کو چلانے اور پیدا کرنے والا ادارہ ہے جس کا صدر دفتر نیو یارک میں واقع ہے اور 20 ممالک میں مکمل یا زیر تعمیر منصوبوں کا حامل ہے جو 3250 میگاواٹ بجلی کی پیداوار کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ یہ نجی ادارہ 2005ء کے اواخر میں چیف ایگزیکٹو آفیسر جوزف برانڈٹ اور ریزروائر کیپٹل گروپ کی جانب سے قائم کیا گیا جو نیو یارک میں واقع 5 ارب ڈالرز کا انوسٹمنٹ فنڈ ہے۔ چار براعظموں میں 1500 سے زائد ملازمین کے ساتھ قدرتی گیس، پن، پون، شمسی، بایوماس، کوئلے اور ایندھنی تیل کے ذریعے چلنے والی بجلی کی پیداوار کی تنصیبات بناتا اور چلاتا ہے۔ ادارے کی توجہ نمو کی زیادہ صلاحیت لیکن کم خدمات کی حامل مارکیٹوں اور ترقی پذیر ممالک میں جدید طریقوں پر مرکوز ہے۔ 2011ء میں گروپ کی کل آمدنی تقریباً 900 ملین امریکی ڈالرز ہوگی۔

مزید معلومات کے لیے ملاحظہ کیجیے http://www.contourglobal.com۔

افریقی ترقیاتی بینک (اے ایف ڈی بی) کے بارے میں

اے ایف ڈی بی ایک کثیر الجہتی ترقیاتی بینک ہے جس کے حصص یافتگان 53 افریقی ممالک علاقائی رکن ممالک – آر ایم سیز) اور 24 غیر افریقی ممالک (غیر علاقائی رکن ممالک – نان –آر ایم سیز) پر مشتمل ہیں۔ بینک گروپ کا بنیادی مقصد رکن ممالک میں انفرادی و مشترکہ طور پر قابل تحمل اقتصادی ترقی اور سماجی پیشرفت کرنے میں حصہ ادا کرنا ہے۔ یہ مقصد ترقیاتی منصوبوں اور پروگراموں کی وسیع رینج میں سرمایہ کاری کے ذریعے حاصل کیا  جا رہا ہے: (الف) سرکاری شعبے کے قرضہ جات (بشمول پالیسی بیسڈ قرضہ جات)، نجی شعبے کے قرضہ جات، ضمانتیں اور ایکوئٹی سرمایہ کاری؛ (ب) ادارہ جاتی مدد کے منصوبوں اور پروگراموں کے لیے تکنیکی مدد؛ اور (ج) ہنگامی مدد کے لیے گرانٹس۔ بینک گروپ کی 2010ء میں منظوریوں کی مالیت 6.5 ارب امریکی ڈالرز رہی۔ اپنے نجی شعبے کی ونڈو کے ذریعے اے ایف ڈی بی نجی شعبے کو مختلف مالیاتی مصنوعات کی رینج فراہم کرتا ہے تاکہ وہ حکومتوں، بشمول صلاحیت کے حامل منصوبوں کے لیے مالیاتی و تکنیکی مدد، کے لیے روایتی قرضہ جات کے آپریشنز مکمل کر سکیں۔ اپریل 2011ء کے اختتام تک نجی شعبے کے منصوبے کی منظوریاں 7.7 ارب امریکی ڈالرز تک پہنچیں۔ بنیادی ڈھانچہ، خصوصاً توانائی، نجی شعبے کے آپریشنز کی ترجیحات میں مرکزی حیثیت کا حامل ہے۔

ای اے آئی ایف کے بارے میں

ایمرجنگ افریقہ انفرا اسٹرکچر فنڈ (“ای اے آئی ایف”) جنوری 2002ء میں قائم کیا گيا ہے اور اس وقت 600 ملین امریکی ڈالرز کا قرضہ جاتی فنڈ ہے۔ ای اے آئی ایف ایک پبلک پرائیوٹ شراکت ہے جو نیم صحراوی افریقہ کے 47 ممالک میں نجی شعبے کی تعمیر و ترقی کے لیے سرمایہ کاری کی صورت میں تجارتی شرائط پر امریکی ڈالرز یا یوروز کی صورت میں قرضہ جات یا میزنائن سرمایہ کاری دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ شعبہ جات میں ٹیلی کامز، نقل و حمل، آب و بجلی شامل ہیں۔ گو کہ ای اے آئی ایف تجارتی بنیادوں پر قرضہ جات دیتا ہے لیکن اس کا مقصد اقتصادی ترقی اور غربت میں کمی، وسیع بنیاد پر آبادیاتی گروہوں کو فائدہ پہنچانا، برابری اور شرکت کے مسائل سے نمٹنا اور سماجی، اقتصادی اور تمدنی حقوق کو فروغ دینا ہے۔

ای اے آئی ایف کا انتظام فرنٹیئر مارکیٹس فنڈ مینیجرز سنبھالتا ہے، جو اسٹینڈرڈ بینک پی ایل سی کا شعبہ ہے۔

مزید معلومات کے لیے ای اے آئی ایف کی ویب سائٹ ملاحظہ کیجیے

http://www.emergingafricafund.com۔

ایف ایم او کے بارے میں

ایف ایم او (نیدرلینڈز ڈیولپمنٹ فنانس کمپنی) ایک ولندیزی ترقیاتی بینک ہے۔ ایف ایم او بلند نظر منتظمین میں سرمایہ کاری کے ذریعے ترقی پذیر اور ابھرتی ہوئی مارکیٹوں میں نجی شعبے کی ترقی میں مدد فراہم کرتا ہے۔ ایف ایم او کا ماننا ہے کہ ایک مضبوط نجی شعبہ اقتصادی و سماجی ترقی کی راہ دکھاتا ہے، لوگوں او کی صلاحیتوں کا مجاز بناتا اور  ان کے معیار زندگی کو بہتر بناتا ہے۔ ایف ایم او کی نظریں ترقی پر بہت زیادہ اثر رکھنے والے چار شعبہ جات پر مرکوز ہیں: مالیاتی ادارے، توانائی، تعمیرات اور زرعی کاروبار۔ 5 ارب یورو کے سرمایہ کاری پورٹ  فولیو کے ساتھ ایف ایم او بڑے دو طرفہ نجی ترقیاتی بینکوں میں سے ایک ہے۔

مزید معلومات کے لیے ملاحظہ کیجیے: http://www.fmo.nl

ذریعہ: کونٹور گلوبل

رابطہ: کونٹور گلوبل

ولیم بیری

+1-212-307-2518

 

اے ایف ڈی بی

سبھا ناگراجن

+216-98-702-948؛ یا

 

ایف ایم او

رینے دی سیوئے

+31-70-314-9868

r.de.sevaux@fmo.nl؛ یا

 

فرنٹیئر مارکیٹس فنڈ مینیجر/ ایمرجنگ افریقہ

انفرا اسٹرکچر فنڈ،

اورلی آرو

+44-20-3145-8610 یا

مارٹن پروس

+44-20-3145-8612