آرٹس مڈویسٹ نے امریکی اور مسلم ثقافتوں کے درمیان پل باندھنے کے لیے بین الاقوامی پروگرام کا آغاز کر دیا

Asianet 45659

مینیاپولس، 27 جولائی 2011ء/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

کاروان سرائے: ایک مقام جہاں ثقافتی ملتی ہیں ڈورس ڈیوک فاؤنڈیشن فار اسلامک آرٹ کی جانب سے ایک ملین ڈالر کی فنڈ شدہ

یو ایس ریجنل آرٹس آرگنائزیشن کی شراکت داری سے منعقدہ

امریکی بالائی مڈویسٹ کے لیے خدمات انجام دینے والی غیر منافع بخش ریجنل آرٹس آرگنائزیشن (RAO) آرٹس مڈویسٹ [http://www.artsmidwest.org ] نے کاروان سرائے: ایک مقام جہاں ثقافتی ملتی ہیں [http://www.caravanserai-arts.org ]کے اجراء کا اعلان کر دیا ہے ، جو ایک انقلابی ہنرمندانہ اور ثقافتی تبادلے کا پروگرام ہے جسے قومی آر اےاوز کی حمایت حاصل ہے۔ کاروان سرائے کو ڈورس ڈیوک فاؤنڈیشن فار اسلامک آرٹ [http://www.ddfia.org ] (DDFIA) کے بلڈنگ برجز پروگرام کے تحت ایک ملین ڈالر کی گرانٹ دی گئی ہے۔

آرٹس مڈویسٹ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈیوڈ فراہر نے کہا کہ “اس منصوبے کے لیے کاروان سرائے کا نام بہت سوچ سمجھ کر منتخب کیا گیا ہے۔ تاریخی طور پر مشرق اور مشرق وسطی میں کاروانوں کے ٹھیرنے کے مقامات کو کاروان سرائے کہا جاتا تھا۔ جو مل بیٹھنے اور ایک دوسرے کے سامنے  اپنی کہانیاں بیان کرنے کے مقامات تھے۔ یہ نام ایک محفوظ مقام پر سیاحوں کے تصور کی یاد تازہ کرتا ہے، ایک مقام جہاں ثقافتی ملتی ہیں۔”

ڈی ڈی ایف آئی اے کے بیٹسی فیڈر کہتے ہیں کہ کاروان سرائے ان کے بلڈنگ برجز گرانٹس کے پروگرام کے لیے فطری طور پر موزوں ہے۔ “کاروان سرائے انتہائی خوبی سے ہمارے فن و ثقافت کو فروغ دینے کے مشن کو پیش کرتا ہے تاکہ امریکی باشندوں کی مسلم معاشروں کے بارے میں سمجھ اور تحسین کو بہتر بنایا جا سکے۔ ہمارا ماننا ہے کہ یہ پائلٹ پروگرام برائے موسیقی و فلم مکالمے کے عمل کا آغآز کرے گا اور ایک دوسرے کو سمجھنے کے کئی دروازے وا کرے گا۔”

اپنے قیام کا تقریبا دوسرا سال مکمل کرنے والا کاروان سرائے امریکہ کی پانچ برادریوں میں ایک پائلٹ پروگرام کے ذریعے شروع ہوا جو پرفارمنگ آرٹس اور فلم پروگرامز پر مشتمل تھے جن میں مسلم ثقافتوں کے فن اور فن کاروں کو پیش کیا گیا۔ پائلٹ پروگرام کی توجہ پاکستان ہے۔ مستقبل کے منصوبوں میں دیگر جغرافیائی خطے اور فن کے دیگر حوالے پیش کیے جائیں گے اور یہ مزید امریکی شہروں کا دورہ کریں گے۔

ملک بھر سے درخواستیں وصول ہونے کے بعد آرٹس مڈویسٹ نے مندرجہ ذیل برادریوں کو کاروان سرائے میں پیش کرنے کے لیے منتخب کیا ہے:

—  دی آرٹس الائنس آف ناردرن نیو ہمپشائر [http://www.aannh.org ]؛ لٹل ٹن، نیو ہمپشائر

— آرٹس ویگو [http://www.oswego.edu/arts ] ایس یو این وائی اوسویگو؛ اوسویگو، نیو یارک

— فرسٹ ورکس  [http://www.first-works.org/index.php ]؛ پروویڈنس، رہوڈ آئی لینڈ

— مون ماؤتھ یونیورسٹی [http://www.monmouth.edu ]؛ ویسٹ لانگ برانچ، نیو جرسی

— دی مرنا لائے سینٹر [http://www.myrnaloycenter.com ]؛ ہیلینا، منی سوٹا

ہر انجمن اپنی برادری میں تین فنی تجربوں کی میزبانی کرے گی، جس میں موسیقی کے مقامی دورے جن میں پاکستانی موسیقاروں کی روایتی اور ہم عصر موسیقی اور ایک مقامی فلم جو ایک پاکستانی فلم ساز کو متعارف کروائے گی، شامل ہوں گے۔ مقامی سرگرمیوں میں تعلیمی ورکشاپس، کارکردگی کے عوامی مظاہرے، فلم اسکریننگز اور مقامی کمیونٹی آؤٹ ریچ شامل ہوں گی۔

آرٹسٹک ڈائریکٹر زیبا رحمن کی زیر نگرانی کاروان سرائے پاکستان کے معروف ہم عصر فن کاروں کی فہرست پیش کرتا ہے:

— عارف لوہار – لوک گلوکار

— قوال نجم الدین سیف الدین [http://www.qawalbachchay.com ] – قوالی گائیک

— صنم ماروی – لوک اور صوفی گلوکارہ

— استاد تاری خان [http://www.taritabla.com ] – امریکہ میں مقیم طبلہ نواز

— عائشہ خان – فلم ساز، “ساختہ پاکستان”

جنوب مشرقی امریکہ میں خدمات انجام دینے والا آر اے او ساؤتھ آرٹس [http://www.southarts.org ] کاروان سرائے کے فلمی دورے کا انتظام کر رہا ہے۔

کاروان سرائے کے لیے پروگرامنگ کا آغاز اکتوبر 2011ء میں ہوگا اور یہ اپریل 2012ء تک چلے گا۔ پروگرامنگ کے دوسرے مرحلے کی منصوبہ بندی  2012- 2013ء کے لیے کی گئی ہے۔

کاروان سرائے: ایک مقام جہاں ثقافتی ملتی ہیں، کا انتظام یو ایس ریجنل آرٹس آرگنائزیشن کی جانب سے آرٹس مڈویسٹ سنبھالتا ہے جسے ڈورس ڈیوک فاؤنڈیشن فار اسلامک آرٹ کے بلڈنگ برجز پروگرام کی مالی مدد حاصل ہے۔ کاروان سرائے کی فلم پروگرامنگ کو ساؤتھ آرٹس کے پروگرام کے مطابق رکھا گیا ہے۔

ذریعہ: آرٹس مڈویسٹ

رابطہ: فیلیشیا نائٹ،

+1-207-831-5676،

felicia@knightvisioninternational.com