مرسک کا 13 ہزار ٹی ای یو کا سب سے بڑا کنٹینر کیریئر اینٹورپ پہنچ گیا

Asianet 45209

اینٹورپ، بیلجیم، 24 جون/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

اینٹورپ کی بندرگاہ پر لنگرانداز ہونے والے بحری جہازوں نے “اولیت” کی روایت کو برقرار رکھا ہے۔ 22 جون کی شام کو مرسک ان فیلڈ اپنے پہلے سفر پر اینٹورپ پہنچا۔ 13 ہزار ٹی یو ای (بیس-فٹ مساوی یونٹ) کی گنجائش والے جہاز کی آمد پہلا موقع ہے کہ ڈینش ادارے مرسک لائن نے اتنے بڑے حجم کا کوئی جہاز اینٹورپ بھیجا ہو۔ اس حجم میں اضافہ بندرگاہ پر بڑھتے ہوئے اعتماد کو ظاہر کرتا ہے جو اینٹورپ بندرگاہ کے دریائے شیلڈٹ کو گہرا کرنے کے تیسرے مرحلے کی تکمیل کے بعد حاصل ہوا ہے۔ بندرگاہ کے رئیس اور پورٹ اتھارٹی کے چیئرمین مارک وان پیل نے کہا کہ “گہرا کرنے کا عمل ایک تجارتی کامیابی ثابت ہوا۔ اب ہم اعلی سطح کے اہم شراکت دار ہیں، کیونکہ دنیا کی سب سے بڑی کنٹینر لائن نے اینٹورپ پر اپنے اعتماد کا اظہار کیا ہے۔”

اینٹورپ کو گزشتہ چند ماہ کے دوران انتہائی بڑے کنٹینر بحری جہازوں (ULCS) کی جانب سے آنے کے مطالبوں میں زبردست اضافہ دیکھنے کو ملا ہے۔ شیلڈٹ کو گہرا کرنے کی بدولت عظیم الجثہ بحری جہاز لہروں-سے آزاد جہاز رانی پر بھروسہ کر سکتے ہیں کیونکہ اب جہاز کے پانی میں ڈوبے رہنے والے حصے کی بلندی 13.10 میٹر تک رہ سکتی ہے۔ اگر لہر کے لیے پروانہ حاصل کر لیا گیا ہو تو جہاز کے ڈوبے رہنے والے حصے کی بلندی اس وقت 15.50 میٹر تک ہو سکتی ہے۔ 2009ء کے اختتام پر زیادہ سے زیادہ (لہر –انحصاریت) جہاز کے ڈوبے رہنے والے حصے کی گنجائش محض 14 میٹر تھی۔ گہرا کرنے کی بدولت جہازی ادارے اب اینٹورپ آنے والے اپنے بحری جہازوں پر اضافی 1500 ٹی ای یو لاد سکتے ہیں۔ شیلڈٹ نیوی گیشن کے لیے مستقل کمیشن بندرگاہ تک رسائی کی صورتحال پر بدستور نظرثانی کرتا رہے گا۔ دریں اثناء یہ یہ سمندر کو جاتے ہوئے “دہلیز” سے گزرنے کے دوران کیلروم فیصد کو کم کرنے کے امکانات کا بھی جائزہ لے رہا ہے۔

اینٹورپ کا انتخاب کر کے نہ صرف جہازی ادارے دسترس کے ساتھ ساتھ ماحول دوستی بھی حاصل کرتے ہیں۔ مارک وان پیل نے کہا کہ “ہماری بندرگاہ اس سلسلے میں زبردست داد و تحسین حاصل کر چکی ہے۔” انہوں نے بات مکمل کرتے ہوئے کہا کہ “اینٹورپ ہمبرگ-لی ہاورے رینج میں موجود دیگر بندرگاہوں کے مقابلے میں زمین کے 100 کلومیٹر اندر ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ بذریعہ سڑک یا ریل کے بجائے بحری نقل و حمل کا زیادہ سے زیادہ استعمال کیا جا سکتا ہے، جو نہ صرف وقت اور اخراجات بچاتا ہے بلکہ کم سے کم کاربن نشانات بھی چھوڑتا ہے۔ یہ ماحول دوستی کے لیے کوشش کرنے والے جہازی اداروں کے لیے اہم فائدہ ہے۔”

اینٹورپ میں اپنے قیام کے دوران مرسک این فیلڈ بائیں کنارے پر ڈورگانک کی گودی پر کھڑا ہوگا۔ اپنی آمد کے چوبیس گھنٹوں کے بعد یہ برطانیہ میں فیلکس اسٹوو کے لیے روانہ ہو جائے گا۔

ذریعہ: بندرگاہ اینٹورپ