بھارت کی تجدید توانائی کی صلاحیتوں کی قوت کا فروغ

AsiaNet 44324

لندن، 26 اپریل/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

بھارت کا اپنے توانائی کے خسارے کے مسائل کو جواب صاف توانائی کی پیداوار کو متاثر کن فوائد پیش کرے گا۔ یورو منی انرجی ایونٹ کا چوتھا ری نیوایبل انرجی فنانس فورم – انڈیا (http://www.reff-india.com) توانائی کی افادیت، ڈيولپرز اور ساخت گروں کے ساتھ مالیاتی برادری کو ایک نئی قابل تجدید توانائی کی شناخت تخلیق کرنے کا موقع دے گا۔ 24 اور 25 مئی 2011ء کو لی میریدیئن نئی دہلی میں قابل تجدید توانائی کے ماہرین اس ترقیاتی ہدف کو حاصل کرنے کی راہ کے تعین کے لیے سر جوڑ کر بیٹھیں گے اور سرمائے کی کمی کو پورا کرنے کے طریقوں پر بھی غور کریں گے۔

مقامی اور بین الاقوامی وفود کے سامنے پالیسیوں کے نفاذ، مقامی اور بین الاقوامی قرضہ جات کی حکمت عملیاں، سرمایہ کاری کے مواقع، خطرات، قابل تجدید ٹیکنالوجیز، اور کاربن فنانس کے موضوعات پر گفتگو؛ اور موجودہ ڈھانچے اور مستقبل کے مواقع پیش کیے جائیں گے۔

بھارت کے سیکرٹری وزارت نئی اور قابل تجدید توانائی دیپک گپتا تیار کردہ پالیسی کا مفصل تجزیہ؛ انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن میں ڈائریکٹر آف انفرا اسٹرکچر انیتا جارج یہ پالیسی کاروں کی خواہشات پر کس طرح پورا اترے گی پر؛ اور انڈین ری نیو ایبل انرجی ڈیولپمنٹ ایجنسی کے ایک سینئر نمائندے قومی و ریاستی سطح پر پالیسیوں میں اختلاف کے موضوع پر خطاب کریں گے۔

بھارت قابل تجدید توانائی کی توسیع کے لیے ایک مثالی مقام پیش کرتا ہے، جہاں بین الاقوامی مہارت مقامی کاروباری وسائل کے ساتھ شراکت کر سکتی ہے۔ بین الاقوامی ادارے کی جانب سے بھارتی قابل تجدید توانائی کے منظرنامے پر اثرات چھوڑنے کی ایک مثال اریوا ری نیو ایبلز کے سی ای او انیل شری واستو ہیں۔

مفید نرخ نامے آنکھیں کھول رہے ہیں اور بھارت میں قابل تجدید توانائی میں سرمایہ لگانے سے ہونے والی آمدنی متاثر کن ہے۔ مالیاتی برادری یہ جاننے کی خواہشمند ہے کہ اسے اپنا پیسہ کہاں لگانا چاہیے۔ اس مذاکرے کی قیادت  اہم مالیاتی ماہرین اور سرمایہ کار کریں گے جن میں ایس بی آئی کیپٹل مارکیٹس، آئی سی آئی سی آئی بینک، انڈسٹریل ڈیولپمنٹ بینک آف انڈیا، ایچ ایس بی سی بینک، کریڈٹ سوئس سیکورٹیز، یس بینک اور مورگن اسٹینلے شامل ہیں۔

حکومت کی جانب سے متاثر کن شمسی توانائی کے فائدے کو متعارف کروانے کے بعد اس شعبے میں سرمایہ کاری کی خواہش واضح طور پر بہت بڑھ گئی ہے۔ اس مذاکرے میں ڈیولپرز اور ساخت گر دونوں شامل ہوں گے جو شمسی توانائی کی ترقی کے لیے دستیاب سرمائے کو بہترین انداز میں استعمال کرنے پر گفتگو کریں گے جن میں تھیری لی پرک، چیئرمین سولیئر ڈائریکٹ؛ اندرپریت ودھوا، سی ای او ازورے پاور؛ اور سرینی ناگابھیروا، مینیجنگ ڈائریکٹر اے ای ایس سولر برائے ایشیا بحر الکاہل شامل ہیں۔

یورومنی انرجی ایونٹس (http://www.euromoneyenergy.com/) عالمی صاف توانائی کانفرنس فراہم کرتے ہیں جن کی توجہ مارکیٹ میں مالیاتی اور سرمایہ کاروں کی کمیونٹی کو اکٹھا کرنے پر مرکوز ہوتی ہے۔

رابطہ

میٹ ایکروئیڈ

یورومنی انرجی ایونٹس

mackroyd@euromoneyplc.com

+44-207-779-8084

ذریعہ: یورومنی انرجی ایونٹس