الیکٹرو-پاپ ریکارڈنگ فنکار سر آئیون نے “ہرے کرشنا”سنگل کے ساتھ بل بورڈ ٹاپ 10 کو بریک کردیا

AsiaNet 44217

نیویارک، 18 اپریل 2011ء / پی آر نیوز وائر – ایشیا نیٹ /

پیس مین میوزک یہ اعلان کرتے ہوئے خوش ہے کہ ریکارڈنگ فنکار سر آئيون  کے نئے سنگل “ہرے کرشنا” کے الیکٹرو – پاپ نسخہ بل بورڈ میگزین کے اپریل 16 کے اجراء کے وقت حقیقتا ایک ٹاپ 10 مشہور گانا ہے۔ #10 میں بل بورڈ کے ڈانس کلب گانوں کی فہرست میں صرف لیڈی گاگا، کیٹی پیری، ریحانہ، جنیفر لوپیز اور دیگر پانچ فنکار سر آئيون  اور #1 مقام کے درمیان ہیں۔ریاستہائے متحدہ امریکا میں یہ کامیابی برطانیہ میں تقریباً یکساں متاثر کن رد عمل کے بعد ہوئی ہے جہاں انہوں نے  نئی موسیقی کی ہفتہ وار فہرست میں #15  اور ڈی ایم سی ورلڈ ہاؤس  اور ڈی ایم سی ورلڈ برطانوی کلب فہرست دونوں میں #14 تک رسائی حاصل کی۔

“ہرے کرشنا” سر آئيون  پاپ / ڈانس  1960ء اور  اوائل 1970ء کے مشہور گانوں کو دوبارہ بنانے کے سلسلہ میں بالکل نیا ہے جو2001ء میں شروع کیا گیا جب انہوں نے پہلی بار جان لینن کی کلاسیکی “امیجن” کا پاپ / ڈانس نسخہ جاری کیا اور وہ اسی سال بل بورڈ کے کلب پلے فہرست  میں بین الاقوامی ٹاپ 40 تک پہنچا۔

گانا “ہرے کرشنا” ابیزا، ہسپانیہ میں گزشتہ موسم گرما کو مذہبی رنگ کے اوپر تنازعہ اور ہرے کرشنا سے منسلک برائیوں کے درمیان سرآئيون  کی مکمل دورانیہ البم   “آئی ایم پیس مین” میں بطور سنگل اور سات- نسخہ ریمکس پیکیج دونوں کے طور پر جاری ہوا تھا۔ تنازع ابیزا میں ڈی جیز کی اس انکشاف کے فوراً بعد ختم ہوا کہ سر آئيون  نے عالمگیر محبت کے فروغ پرتوجہ مرکوز رکھتے ہوئے  گیت کو دوبارہ لکھ کر اسے  انگریزی میں ترجمہ کیا –بجائے کسی مخصوص خدا کی پرستش کرنے کے۔ اور جب ایک بار گانا ابیزا میں ڈانس فلور پر مقبول ہوگیا، برطانیہ، فرانس، جرمنی اور بالآخر ریاستہائے متحدہ امریکا  کے معروف ڈی جیز نے ریکارڈ کو مزید سنجیدگی سے لیا،  پروڈکشن معیار اور مختلف اقسام کے مکسز کو سراہنا شروع کیا اور اسے اپنی پلے لسٹ میں شامل  کرلیا۔ سر آئيون  نے کہا کہ ” ‘ہرے کرشنا’ کی کامیابی  کی بڑی وجہ وہ ڈی جیز ہیں جنہوں نے موقع حاصل کیا اور جلد منظر عام پرآئے، جنہوں نے ٹریک کی معاونت  ایسے وقت میں کی کہ جب دیگر پس و پیش سے کام لے رہے تھے۔ بطور فنکار میں ان کے لیے بے انتہا تحسین اور احترام  رکھتا ہوں۔”

سر آئيون  کا ٹریک ریکارڈ کرنے کا فیصلہ  کسی بھی مذہب کے ساتھ کوئی ربط نہیں رکھتا اور نہ ہی وہ ہرے کرشنا تحریک سے کسی بھی طرح کا تعلق نہیں رکھتے ہیں۔ سر آئيون  نے وضاحت کی کہ “میں جب تک زندہ ہوں، میں کبھی نہیں بھول سکتا، ساٹھ کی دہائی میں ایک بچے کی طرح، ہرے کرشنا شخص و خاتون دونوں کو نارنجی رنگ کے لباس میں دیکھتے ہوئے ، گنجے سر کے ساتھ، باغوں میں رقص کرتے ہوئے اور ہوائے اڈوں پر مفت بھول تقسیم کرتے ہوئے۔یہ صرف زندہ رہنے کی ایک مثالیں نظر آتی ہیں اور باطنی تسکین اور خوشی کی حالت کے حصول کے لیے کوئی مادی تصرف درکار نہیں۔ مجھے کچھ علم نہیں کہ ہرے کرشنا کے کیا معنیٰ ہیں، لیکن بھارت میں انہیں بارہا سب سے معروف منترا گانا سن کر مجھ پر ایک بے خودی سا اثر ہوا۔ لہٰذا میں نے خیال کیا  کہ یہ باآسانی روحانی بے خودی رقص کے ریکارڈ میں منتقل ہوجائے گا۔”

“ہرے کرشنا” کے الیکٹرو – پاپ نسخے میں پوری دنیا سے پیشہ آور اسٹوڈیو کی جانب سے متعدد مکسز شامل ہیں جیسے سر آئيون  کے پروڈیسر فورڈ، ہاکس ٹون وورز، ڈی جے پروین نائر، فلیش برادران، سی آر این شوگرمین، کنگ اینڈ وہائٹ اور ٹونی موران اینڈ وارین ۔

سر آئيون  طویل –دورانیہ کی البم فروخت کا تمام ریکارڈنگ فنکار کے حقوق پیس مین فاؤنڈیشن کو عطیہ کردیا  ہے جسے انہوں نے نفرت انگیز جرائم اور قبل از – تکلیف دہ دباؤ کے عارضے (پی ٹی ایس ڈی) کے خلاف جدوجہد کے لیے بنایا تھا۔

پیس مین موسیقی میں “آئی ایم پیس مین” البم آئی ٹونز اور امیزون ڈاٹ کام پر فروخت کے لیے دستیاب ہے۔ “ہرے کرشنا” سنگل اور ری-مکسز آئی ٹونز اور بیٹ پورٹ پر فروخت کے لیے دستیاب ہیں۔

* سرآئيون  کے متعلق مزید معلومات کے لیے ملاحظہ فرمائیں www.SirIvanMusic.com۔

رابطہ:

جیمز سلی مین

+1-347-413-5522

jamessliman@optonline.net

ذریعہ: سر آئيون