تیس نومبر امریکی احتجاج: چین، عالمی ایڈز میں درست حصہ ادا کرو

AsiaNet 42372

واشنگٹن، 29 نومبر 2010ء / پی آر نیوز وائر – ایشیا نیٹ /

ایڈز کے عالمی دن  کی شام واشنگٹن میں چین کے سفارتخانے اور لاس اینجلس میں قونصل خانے پر مستقل احتجاج کے ذریعے چین کو عالمی فنڈ کے نامناسب استعمال کے باعث نشانہ بنایاجائے گا؛  آخری دس سالوں میں، دنیا کی دوسری بڑی معیشت نے فنڈ سے تقریباً 1 کھرب ڈالر وصول کیے  جبکہ صرف 16 ملین کی امداد فراہم کی۔

لاس اینجلس میں 150 ایڈز مظاہرین متوقع ہیں؛ 5:30  بجے شام بمطابق بحر الکاہل وقت پر عالمی اخباری ٹیلی کانفرنس مظاہرے کو فالو کرے گا

یکم دسمبر ایڈز کے عالمی دن کی شام ایڈز کی سب سے بڑی عالمی تنظیم  ایڈز ہیلتھ کیئر فاؤنڈیشن (http://www.aidshealth.org) (AHF) واشنگٹن، ڈی سی اور لاس اینجلس میں بیک وقت دو مظاہروں کی قیادت کرے گی جس کا مقصد چین کی حکومت کو انسداد ایڈز، ٹی بی اور ملیریا کے عالمی فنڈ کے غلط استعمال پر نشانہ بنانا ہے۔ گذشتہ دس سالوں میں چین –اب دنیا کی دوسری بڑی معیشت – فنڈ سے تقریباً 1 کھرب ڈالر (940 ملین ڈالر) وصول کرچکا  ہے جبکہ اس نے صرف 16 ملین ڈالر امداد فراہم کی ہے۔ انہی سالوں میں رہاستہائے متحدہ امریکا نے فنڈ میں 5.1 کھرب ڈالر کی امداد دی جو کہ فنڈ کی مکمل امداد کے 28 فیصد زیادہ ہے۔ یہ احتجاج منگل کی صبح 30 نومبر کو واشنگٹن میں چینی سفارتخانے (2300 کونکٹیکٹ ایوینیو، این ڈبلیو، 20008؛ 12 تا 1 بجے دوپہر مشرقی وقت) اور لاس اینجلس میں عوامی جمہوریہ چین کے قونصل خانے (443 شاٹوپلیس، لاس اینجلس، 90020، 9 تا 10 بجے صبح بحر الکاہل وقت)پر منعقد کیا جائے گا۔ احتجاج کے بعد شام 5:30 بحرالکاہل وقت (بیجنگ اور شنگھائی ، میں 9:30 اے ایم بدھ یکم دسمبر)پر اخباری ٹیلی کانفرنس بھی منعقد کی جائے گی۔

(تصویر: http://photos.prnewswire.com/prnh/20101129/AQ08096)

لاس اینجلس

چین عالمی فنڈ احتجاج (نوٹ: لاس اینجلس کے احتجاج میں تقریباً 150 افراد متوقع ہیں)

کب:     منگل، 30 نومبر 2010ء

وقت:   9:00 – 10:00 (بحرالکاہل  وقت)

کہاں:    عوامی جمہوریہ چین کے قونصل خانے

443 شاٹو پلیس، لاس اینجلس، کیلی فورنیا 90020

رابطہ:    جیڈ کینسلے  (323) 791-5526  سیل

لوری یغیا یان (323) 377-4312 سیل

واشنگٹن، ڈی سی

چین عالمی فنڈ احتجاج

کب:     منگل، 30 نومبر 2010ء

وقت:   12:00 – 1:00 پی ایم (مشرقی وقت)

کہاں:    چینی سفارت خانہ

2300 کونکٹیکٹ ایونیو، این ڈبلیو، واشنگٹن، ڈی سی 20008

رابطہ:    جوئی ٹیرل (213) 453-3630 سیل

ٹیلی کانفرنس  (چین احتجاج کے بعد) – شام 5:30 بحر الکاہل وقت، چین اور ایڈز فنڈنگ کے بعد تک

کہاں:    منگل، 30 نومبر 2010ء، شام 5:30 بحر الکاہل وقت (9:30 اے ایم شنگھائی اور بیجنگ –وقت یکم دسمبر بدھ مقامی وقت)

ٹیلی کانفرنس کی ڈائل ان معلومات:

–       امریکی کالرز: +1.877.411.9748 شرکت کا کوڈ #7931503

–       بین الاقوامی کالرز: +1.636.651.3128 شرکت کا کوڈ #7931503

گلوبل فنڈ ایک پروگرام ہے جسے دولت مند اقوام سرمایہ فراہم کرتی ہیں جو طبی انفراسٹرکچر کی تعمیر اور امراض کے خلاف  وسائل کی کمی رکھنے والے ترقی پذیر ممالک کی اقتصادی مدد فراہم کرنے کے لیے بنایا گیا ہے۔ ایڈز کے وکلاء ڈی سی اور ایل اے میں دونوں جگہ احتجاج کرنے والے پر بینرز اور سائن اٹھائیں گے جن پر انگریزی اور چینی دونوں میں “چین! عالمی  ایڈز میں درست حصہ ادا کرو!” درج ہوگااور پلیکارڈز کے ساتھ چینی کرنسی 100 یوان، رنمنبی، کی رنگین تصاویر بھی تھام رکھی ہوں گی۔

جب چین نے گلوبل فنڈ میں صرف 16 ملین ڈالر کی امداد فراہم  کی اور اب تک 940 ملین ڈالر وصول کیے اس کے برعکس ریاستہائے متحدہ امریکا نے 5.1 کھرب ڈالر جبکہ جاپان نے 1.3 کھرب ڈالر اور فرانس نے 2.2 کھرب ڈالر امداد دی۔

ایڈز ہیلتھ کیئر فاؤنڈیشن کے صدر مائیکل وائنسٹائن نے کہا کہ “چینی حکومت کو ایچ آئی وی / ایڈز پر گذشتہ دہائی کے مقابلے میں مزید سرکردگی ظاہر کرنا چاہیے اور ایڈز کی عالمی وبا سے لڑنے کے لیے مدد میں وسیع اقتصادی ذمہ داری کا بوجھ اٹھانا چاہیے۔ گلوبل فنڈ سرمائے کے بڑے وصول کنندگان میں سے ایک چین – دنیا میں امریکا کے بعد دوسری بڑی معیشت – بے خوفی سے لے رہی ہے – شدید ضرورت رکھنے والے ممالک سے ضروری وسائل کو دور لے جاچکی ہے۔ واشنگٹن اور لاس اینجلس میں ان احتجاج کے ذریعے اور ایوڈز کے عالمی دن کے قریب ہم چینی حکومت پر گلوبل فنڈ میں  ‘زیادہ دینے اور کم لینے’ کے لیے دباؤ ڈالیں گے۔”

چین کی بطور عطیہ دینے اورعالمی ہیلتھ فنڈنگ سے وصول کرنے کے درمیان فرق کے حوالے سے ایسوسی ایٹڈ  پریس  کے مضمون ” China Rises and Rises, Yet Still Gets Foreign Aid” (اے پی / فوربس، گیلین وونگ، 9/25/10) نے نقطہ اٹھایا کہ “چین نے اولمپکس 2008ء میں کھربوں ڈالر  خرچ کر ڈالے۔ اس نے خلا میں خلانورد بھیجے۔ یہ حال ہی میں دنیا کی دوسری بڑی معیشت بن چکا ہے۔ اب بھی وہ بیرونی حکومتوں سالانہ 2.5 بلین ڈالر سے زائد کی سے امداد لے رہا ہے –  اور امداد دینے والے ممالک کے ٹیکس دہندہ اور قانون ساز بھی پوچھ رہے کیوں۔عالمی معاشی سست روی کے باعث حکومتوں کی جانب سے بجٹ  کم کرنے کے ساتھ، کئی ممالک غیر مستحکم سیاسی و معاشی فراخدلی کی جانب دیکھ رہے ہیں۔ چین کہتا ہے کہ وہ امداد کی ضرورت میں اب بھی ایک ترقی پذیر ملک ہے جبکہ چند نقاد استدلال کرتے ہیں کہ سرمایہ افریقہ کے غریب ممالک یا دیگر جگہوں پر جانا چاہیے۔”

واشنگٹن میں موجود تعلقات عامہ کے سربراہ اور جنرل کونسل  برائے ایڈز ہیلتھ کیئر فاؤنڈیشن ٹام میئرز نے کہا کہ “اس وقت چین کے پاس 2.5 ٹریلین ڈالر کے بیرونی کرنسی محفوظات  ہیں۔ اس نے 2008ء سرمائی اولمپکس کے انعقاد میں 40 کھرب ڈالر سے زائد اور 2010ء ورلڈ ایکسپوزیشن کی میزبانی پر 58 کھرب ڈالر خرچ کیے ہیں۔ چین ایک مالدار ملک ہے اور اپنی حفاظت صحت کی ضروریات کو پورا کرسکتا ہے۔”

ایڈز ہیلتھ کیئر فاؤنڈیشن کے بارے میں

ایڈز  کی سب سے بڑی عالمی تنظیم ایڈز ہیلتھ کیئر فاؤنڈیشن ریاستہائے متحدہ امریکا، افریقہ، لاطینی امریکا ، کیریبئن، ایشیا / پیسیفک خطے اور مشرقی یورپ میں دنیا بھر کے 22 ممالک میں 140,000 سے زائد افراد کو طبی حفاظت اور / یا خدمات فراہم کرتی ہے۔ http://www.aidshealth.org

ذریعہ: ایڈز ہیلتھ کیئر فاؤنڈیشن

رابطہ: لاس اینجلس

گیڈ کینسلے

+1-323-308-1833

یا موبائل: +1-323-791-5526

gedk@aidshealth.org

یا واشنگٹن

ٹام میئرز

موبائل: +1-323-860-5259

tom.myers@aidshealth.org

دونوں برائے اے ایچ ایف