ایرانی عالم دین کی مجوزہ ملک بدری پر نوبل انعام یافتہ افراد کی جانب سے آسٹریلیا پر تنقید

سڈنی، یکم جون/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

نوبل انعام یافتہ بشپ ڈیسمند ٹوٹو نے حقوق انسانی کی ایک عالمی مہم میں شمولیت اختیار کی ہے جو آسٹریلیا کی جانب سے فوری طور ملک سے بے دخلی کا سامنا کرنے والے ایک اصلاح پسند ایرانی عالم دین کے ساتھ سلوک کی مذمت کر رہی ہے۔

اصلاح پسند شیعہ عالم دین شیخ منصور لغاعی 16 سالوں سے آسٹریلیا میں پرامن طور پر اپنے اہل خانہ کے ہمراہ رہ رہے ہیں۔ چند سال قبل آسٹریلین سیکورٹی انٹیلی جنس آرگنائزیشن (ASIO) کی جانب سے دو ناموافق جائزوں کے بعد انہیں کبھی مستقل رہائشی کی حیثیت نہیں دی گئی۔

شہری و سیاسی حقوق پر بین الاقوامی معاہدے (ICCPR)، جس پر آسٹریلیا بھی دستخط کر چکا ہے،  کے مطابق شفاف سماعت کا حق رکھنے کے باوجود آسٹریلیا نے کبھی ڈاکٹر لغاعی کو خود پر لگائے گئے الزامات کی نوعیت سے آگاہ نہیں کیا۔ سڈنی میں بین المذہبی مکالمہ اور مذہبی رواداری کے معروف مبلغ ڈاکٹر لغاعی نے بھرپور انداز میں اس الزام کی تردید کی ہے کہ وہ آسٹریلیا کی قومی سلامتی کے لیے خطرہ ہیں۔

بشپ ٹوٹو نے کہا کہ “جنوبی افریقہ میں ہم بغیر مقدمے کے گرفتاریوں کے عادی ہیں۔ آسٹریلیا میں آپ کو بغیر مقدمے کے ملک بدر ہونا ہوگا۔”

اپریل میں اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے حقوق انسانی (UNHCR) نے آسٹریلیا سے باضابطہ درخواست کی تھی کہ وہ ڈاکٹر لغاعی کو ملک بدر نہ کرے اس عرصے میں وہ ان کے حقوق انسانی کی خلاف ورزی کا جائزہ لے۔ 17 مئی کو آسٹریلیا کے وزیر برائے مہاجرین سینیٹر کرس ایونز نے اقوام متحدہ کی درخواست کو بالائے طاق رکھتے ہوئے اعلان کر دیا کہ ڈاکٹر لغاعی کے پاس ملک چھوڑنے کے لیے چھ ہفتے ہیں۔

ملائیشیا کے معروف ماہر سیاسیات، اسلامی اصلاح پسند و کارکن ڈاکٹر چندر مظفر نے کہا کہ “شیخ منصور لغاعی کی قریب الوقوع ملک بدری انصاف کا مذاق اڑانے کے مترادف ہے۔ اس امر میں کوئی شبہ نہیں کہ حقوق انسانی کی خلاف ورزی کی گئی ہے۔”

افغانستان اور سری لنکا سے تعلق رکھنے والے سیاسی پناہ کا مطالبہ کرنے والے افراد کے ساتھ آسٹریلوی حکومت کے برتاؤ میں سیاسی مفاد کو انسانی حقوق سے بالاتر سمجھنے پر ایمنسٹی انٹرنیشنل کی جانب سے کی گئی تنقید کے ایک ہفتے بعد اب انسانی حقوق کے بین الاقوامی حامی ڈاکٹر لغاعی کی پشت پر ہیں، جن میں شامل ہیں:

٭بشپ ریاح ابو العسال، بشپ اسرائیل، فلسطین، اردن، شام و لبنان

٭مآریاد گوریگان-میگوئیر، نوبل امن انعام یافتہ

٭ڈاکٹر چندر مظفر

٭پروفیسر ہانس کوخلر، صدر انٹرنیشنل پروگریس آرگنائزیشن

٭ڈاکٹر نورمن فنکلسٹائن، امریکی ماہر سیاسیات

٭بشپ ڈیسمنڈ ٹوٹو

٭بشپ جارج براؤننگ، ریٹائرڈ بشپ از کینبرا و گولبرن

ڈاکٹر لغاعی کے ایک ہزار سے زائد حامی جمعرات، 3 جون کو آسٹریلوی مشرقی معیاری  وقت کے مطابق 12 بجے کینبرا میں پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے ریلی کی تیاری کر رہے ہیں

www.savethesheikh.com

روابط برائے ذرائع ابلاغ: ہیلن سگنی

+61 425 202 654

helensigny@writemedia.com.au

 

فادر ڈیو اسمتھ

+61 409 620 009

dave@fatherdave.org

 

بین سال

+61 424 365 146

ben.saul@sydney.edu.au

 

ذریعہ: کرسچن سیو دی شیخ کوالیشن