کینٹن میلہ: رکنے کا کوئی موقع نہیں

گوانگچو، چین، 11 مئی/پی آرنیوزوائر-ایشیا-ایشیانیٹ/

چین کے برآمدی و درآمدی میلے میں متاثر کن شرکت

کاروباری دنیا کے کامیاب ترین ادارے بدتر معاشی صورتحال کو رکاوٹ کے طور پر نہیں بلکہ ایک موقع کے طور پر دیکھنے کا رحجان رکھتے ہیں۔ سالہا سال سے، دنیا بھر سے تعلق رکھنے والے تقریبا ڈھائی لاکھ دور اندیش فروخت کنندہ و خریدار حقیقی منافع کی خواہش لیے تمام تر اقتصادی صورتحال اور مالیاتی پیش بینیوں کو بالائے طاق رکھتے ہوئے دور اندیشانہ قدم اٹھاتے ہیں۔ اس سال اس مقصد کے لیے، ان میں سے کئی افراد نے کینٹن میلے کا رخ کیا، جس کا اہتمام چائنا فارن ٹریڈ سینٹر نے کیا۔

تائیوان اسٹار انڈسٹریل انکارپوریٹڈ کے جنرل مینیجر جناب لی ساتویں مرتبہ گوانگڈونگ آئے۔ خراب مالی صورتحال میں بھی میلے میں کاروبار کرنے پر اصرار نے انہیں محنت کا پورا معاوضہ دیا: صرف گزشتہ سال میں، ان کے ادارے کے آرڈرز میں 10 فیصد کا شاندار اضافہ ہوا۔ یہ سمجھنا مشکل نہیں کہ یہ کیسے ہوا۔

صنعتی مشینری سے لے کر کیمیائی کوٹنگ، ٹیکسٹائل اور اس سے کہیں آگے تک پیش کرنے والے، 107 ویں کینٹن میلے میں 150،000 سے زائد مختلف اقسام کی اشیاء نمائش کے لیے رکھی گئیں۔ کاروبار کی استعداد رکھنے والے کسی بھی فرد کے لیے اتنی اقسام کی مصنوعات کے گرد ہونا گویا ایک سونے کی کان میں قدم رکھنا ہے؛ یعنی یا تو آپ وہاں موجود ہوں یا پھر یہ موقع کھو دیں۔ حتی کہ وہ بھی جن کے پاس میلےکے 56 ہزار اسٹالز میں سے محض چند دیکھنے ہی کا وقت ہو – جیسا کہ جناب لی – کے لیے بھی مواقع دروازے پر دستک دے رہے ہیں۔

جب بات بین الاقوامی معیشت کی آتی ہے تو اس پر چھائے ہوئے گہرے بادل بھی گفتگو کا حصہ بنتے ہیں۔ لیکن کینٹن میلے میں بات صرف اور صرف امید کی کرن کی ہے۔ یہاں، نہ صرف اعلی معیار کی چینی اشیاء، بلکہ غیر ملکی اشیاء بھی چینی مارکیٹ میں غیر معمولی طلب رکھتی ہیں۔ خلاف توقع، لوگوں کی بڑھتی ہوئی اس نتیجے پر پہنچنا شروع ہو گئی ہے۔

اس سال غیر ملکی خریداروں کی حاضری کی تعداد میں متوازن اضافہ برقرار رہا، جو ایشیا، امریکین، افریقہ اور اوقیانوسیہ کی تمام بڑی مارکیٹوں میں سے آئے۔ لیکن ملائیشیا-چین ایوانہائے تجارت کے صدر داتوک یونگ آہ پوئی نے جو دیکھا اس کے مطابق چھوٹی اور ابھرتی ہوئی مارکیٹوں سے تعلق رکھنے والے شرکاء کی بڑھتی ہوئی تعداد ظاہر کرتی ہے کہ عالمی معیشت صارفی اعتماد کے باعث ابتدائی طور پر بہتری کی جانب پلٹ رہی ہے۔

4 مئی تک 212 ممالک اور خطوں کے 203،996 خریداروں کی متاثر کن تعداد کو گنا گیا۔ دریں اثناء، برآمد کی مقدار پہلے ہی 34.3 ارب امریکی ڈالرز کو عبور کر چکی ہے۔ کینٹن میلہ بلاشبہ عالمی معاشی بحالی کے متحرک شرکاء کے لیے پسندیدہ مقام بن چکا ہے۔

ذریعہ: چائنا فارن ٹریڈ سینٹر (CFTC)

 

رابطہ برائے ذرائع ابلاغ:

جناب سیاؤینگ وو

+86-20-8913-8628