بینک آف امریکہ کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے برائن موئے نہان کو سی ای او منتخب کر لیا

چارلوٹ، شمالی کیرولائنا، 17 دسمبر/پی آرنیوزوائر-ایشیانیٹ/

موئے نہان کا نیا عہدہ یکم جنوری 2010ء سے موثر ہوگا

بینک آف امریکہ کے بورڈ آف ڈائریکٹر نے آج ادارے کے چیف ایگزیکٹو آفیسر اور صدر کی حیثیت سے برائن ٹی موئے نہان کو منتخب کیا ہے۔ وہ 31 دسمبر 2009ء کو کینتھ ڈی لیوس کی ریٹائرمنٹ کے بعد عہدہ سنبھالیں گے اور بورڈ آف ڈائریکٹرز میں شمولیت حاصل کریں گے۔

اس اعلامیہ سے متعلقہ ملٹی میڈیا اثاثے دیکھنے کے لیے کلک کیجیے:

http://multivu.prnewswire.com/mnr/bankofamerica/41726/

(لوگو: http://www.newscom.com/cgi-bin/prnh/20050720/CLW086LOGO-b)

50 سالہ موئے نہان بینک آف امریکہ میں متعدد اعلیٰ قائدانہ عہدوں پر فائز رہے ہیں اور تقریباً تمام بزنس لائنز کا تجربہ رکھتے ہیں۔ وہ صارفی و چھوٹے کاروباروں کی بینکاری کے شعبے کے صدر تھے جو ریاستہائے متحدہ امریکہ بھر میں 53 ملین سے زائد گھرانوں اور چھوٹے کاروباروں کے ساتھ تعلق رکھتا ہے۔

داخلی و بیرونی دونوں امیدواروں پر غور کرنے والی تلاش کی قیادت کرنے والے بینک آف امریکہ کے چیئرمین ڈاکٹر والٹر ای میسے نے کہا ہے کہ “برائن کا وسیع تجربہ، ادارے کے اندر اور باہر تعلقات اور کاروباری حرکیات کو سمجھنے کی واضح صلاحیت اور موثر تعمیری تبدیلی نے انہیں اس عہدے کے لیے بہترین شخص بنایا۔

“ویلتھ مینجمنٹ، کارپوریٹ اور انوسٹمنٹ بینکنگ اور کنزیومر بینکنگ کے قیادت کرنے والے اعلیٰ ترین ایگزیکٹو رہ چکے ہیں۔ ہماری کیپٹل مارکیٹوں کے کاروباروں میں بین الاقوامی صارفین کے ساتھ کام نے انہیں عالمی مالیاتی خدماتی مارکیٹوں کی وسیع معلومات اور نقطہ نظر دیا ہے۔ انہوں نے ہر کردار میں برتری حاصل کی، صارفین اور متعلقین  سے خیر خواہی اور عزت حاصل کی۔ مختصراً یہ کہ برائن مستقبل میں ہمارے ادارے کے تمام اہداف کے حصول کے لیے معلومات، تجربے اور قیادت کا بہترین ملاپ ہیں۔

میسے نے اپنی گفتگو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ “جب ہم بیرونی امیدواروں پر غور کر رہے تھے تو بورڈ نے حصص یافتگان، ضابطہ کاروں اور دیگر کی رائے کے بعد فیصلہ کیا کہ برائن کا تجربہ اُن تمام امیدواروں کے برابر یا زیادہ تھا، اور انہوں نے تبدیلی کے آسان عمل کو پیش کیا۔ بینک آف امریکہ ایک باصلاحیت ٹیم کا حامل ہے اور ڈائریکٹرز کی حیثیت سے ہماری اہم ذمہ داریوں میں سے ایک اس ٹیم  کی مدد کرنا ہے کیونکہ یہ ہمارے تمام حلقہ جات میں ہماری قدر و اہمیت بڑھاتا ہے۔

موئے نہان، جن کا نام رواں سال کے اوائل میں موجودہ عہدے کے لیے نامزد کیا گیا تھا، نے 1993ء میں فلیٹ بوسٹن فنانشل (بینک آف امریکہ کا پیشرو) میں شمولیت حاصل کی۔ انہوں نے اس ادارے میں مختلف اعلیٰ عہدوں تک ترقی کی۔ 2004ء میں بینک آف امریکہ نے فلیٹ کو حاصل کر لیا تھا۔

موئے نہان نے کہا کہ “اس اہم ادارے کی قیادت کرنے کا موقع ملنا میرے لیے باعث فخر ہے۔ ہمارے پاس بینک آف امریکہ کو دنیا کا بہترین مالیاتی خدماتی ادارہ بنانے کے لیے ضروری سب کچھ ہے۔ ہم ہر اہم شعبے اور مارکیٹ میں قائدانہ پوزیشن کے حامل ہیں۔ ہم ایسی صلاحیتوں کے حامل ہیں جو میرے خیال میں تمام مقابل اداروں کے برابر یا اس سے زائد ہیں۔ ہم درست قدر اور کلچر کے حامل ہیں اور ہم غیر یقینی حد تک وابستہ انتظامی ٹیم اور ایسوسی ایٹ بیس رکھتے ہیں۔

موئے نہان نے گفتگو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ “اب ہمیں صرف عملدرآمد کرنے کی ضرورت ہے۔ یہ ادارہ عملیاتی فضیلت اور مستحکم عملدرآمد کی طویل روایت رکھتا ہے۔ میرا ہدف اپنی کوششوں پر از سر نو توجہ مرکوز کرنا اور ان بنیادی صلاحیتوں پر توجہ کرنا ہوگا جو ہمیں دنیا کا بہترین مالیاتی خدمات فراہم کرنے والا ادارہ بنا دے گی۔

“صارفین اور گاہکوں نے کین لوئس، ہو میک کول اور گزشتہ چند دہائیوں میں تیار کیے گئے دیگر فرنچائزز سے فائدہ اٹھایا ہے۔ ہمارا کاروباری ماڈل حصص یافتگان کے لیے بھی کام کر رہا ہے۔ بحران سے قبل ہم ملک میں اپنے کاروباری تنوع کے باعث سب سے موثر بینکاری ادارہ تھے، اور ہم آگے بڑھنے کے لیے اسی کو ہدف میں رکھے ہوئے ہیں۔ میرا ماننا ہے کہ ہم تحفظ اور بھروسے کو مدد فراہم کرنے والی تمام سطح، سرمائے، لیکوئیڈٹی اور آمدنی کے تنوع کے حامل ہیں۔

موئے نہان نے کہا کہ “لیکن دنیا کے تبدیل ہونے کے ساتھ ہمیں لچک دار انداز میں آگے بڑھنا اور مستحکم روایات پر چلنا ہوگا اور اپنے صارفین کی ضروریات پوری کرنے کے لیے تبدیلیوں کو اپنانا ہوگا۔ ہم اسے کاروباری ماڈل کو تبدیل کرنے کی نظر سے نہیں دیکھتے بلکہ کاروبار کرنے کے طریقے کی تبدیلی کی حیثیت سے دیکھتے ہیں۔ ہم دنیا کی بہترین مالیاتی مصنوعات اور خدمات کی فراہمی کے خواہش کے ساتھ منصف مزاجی اور شفافیت کے قائل ہیں اور اس سے وابستہ ہیں۔”

گزشتہ اگست میں کنزیومر اینڈ اسمال بزنس بینکنگ کو سنبھالنے سے قبل موئے نہان نے نئے بنیادی کریڈٹ کارڈ کو متعارف کرانے، کریڈٹ کارڈ کے نرخوں کو منجمد کرنے اور صارفین کو فائدہ پہنچانے کے لیے اوورڈرافٹ پالیسیوں میں ترمیم کی قیادت کی۔

موئے نہان لیوس کی جگہ سنبھالیں گے جو 2001ء سے بینک آف امریکہ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے تھے۔ لیوس نے حال ہی میں اعلان کیا تھا کہ وہ ادارے میں 40 سالہ خدمات کے بعد 31 دسمبر 2009ء کو ریٹائر ہو جائیں گے۔

لیوس نے کہا کہ “میں گزشتہ چھ سالوں سے موئے نہان کے ساتھ کام کر رہا ہے، اور میرا ماننا ہے کہ وہ مستقبل میں ادارے کی قیادت کے لیے موزوں ترین شخص ہیں۔ وہ ایک فیصلہ کن رہنما اور محنتی مینیجر ہیں۔ وہ امریکی اور عالمی مالیاتی خدمات کی مارکیٹوں کو سمجھتے ہیں اور رسک اور ریوارڈ کو منظم کرنے کے فن سے بخوبی واقف ہیں۔ وہ اس ادارے اور اس کی صلاحیتوں کو بھی کسی دوسرے سے کہیں زیادہ جانتے ہیں۔ سب سے زیادہ اہم یہ کہ وہ ہمارے صارفین، حصص یافتگان، متعلقین اور ہماری خدمات سے استفادہ اٹھانے والی دیگر کمیونٹیز کا دل کی گہرائیوں سے خیال رکھتے ہیں۔ میں بورڈ کے انتخاب کو داد دیتا ہوں – برائن ایک کامل رہنما ہیں جو ہمارے کئی مارکیٹ-معروف کاروباروں کی ایک ساتھ قیادت کریں گے، تاکہ وہ عملیاتی فضیلت کی طویل المیعاد روایت پر آگے چل سکیں اور اس امر کو یقینی بنائیں گے کہ آگے بڑھنے کے ساتھ ساتھ ہمارے صارفین اور گاہکوں پر 100 فیصد توجہ مرکوز رہے۔”

برائن موئے نہان کے بارے میں

برائن موئے نہان نے اپریل 1993ء میں فلیٹ بوسٹن فنانشل میں شمولیت اختیار کی۔ انہیں کارپوریٹ اسٹریٹجی اینڈ ڈیولپمنٹ کے قائد کی حیثیت سے ترقی دی گئی اور بعد ازاں وہ ادارے میں گلوبل ویلتھ اینڈ انوسٹمنٹ مینجمنٹ کے قائد کے عہدے تک پہنچے۔ 2004ء میں بینک آف امریکہ اور فلیٹ بوسٹن فنانشل کے انضمام کے بعد انہوں نے گلوبل ویلتھ اینڈ انوسٹمنٹ مینجمنٹ کے صدر کی حیثیت سے بینک آف امریکہ میں شمولیت اختیار کی، جس میں ریاستہائے متحدہ امریکہ اور 150 سے زائد ممالک میں انفرادی اور ادارہ جاتی سرمایہ کاروں، تجارتی کاروباروں، بڑے اداروں، مالیاتی اداروں اور حکومتی شعبہ جات  کے لیے صنعت کی بہترین مالیاتی خدمات کی فراہمی نگرانی کی ۔

2007ء سے 2009ء تک موئے نہان نے گلوبل کارپوریٹ اینڈ انوسٹمنٹ بینکنگ کے صدر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں اور دنیا بھر میں 140،000 سے زائد صارفین کے لیے مالیاتی خدمات کی مصنوعات اور خدمات کی فراہمی کے لیے کاروبار کی قیادت کی۔ جن میں چھوٹے، تیزی سے ابھرتے ہوئے اور وسطی مارکیٹ کے اداروں سے لے کر بڑے کثیر القومی ادارے، حکومتی شعبہ جات، مالیاتی اسپانسرز اور ادارہ جاتی سرمایہ کار شامل تھے۔

موئے نہان بینک کی ایگزیکٹو مینجمنٹ ٹیم کے رکن ہیں اور بینک آف امریکہ کی گلوبل ڈائیورسٹی اینڈ انکلوژن کونسل کی صدارت کرتے ہیں۔

موئے نہان براؤن یونیورسٹی اور یونیورسٹی آف نوٹرے ڈیم لاء اسکول سے گریجویٹ ہیں۔ وہ یوتھ بلڈ بوسٹن اور بوائز اینڈ گرلز کلبز آف بوسٹن کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے رکن ہیں۔ وہ رہوڈ آئی لینڈ کی ٹریولرز ایڈ سوسائٹی اور پروویڈنس ہیٹین پروجیکٹ انکارپوریٹڈ کے سابق چیئرمین بھی ہیں۔

کینتھ ڈی لوئس کے بارے میں

لیوس 2001ء میں چیف ایگزیکٹو آفیسر نامزد ہوئے، انہوں نے یہ عہدہ 1983ء سے 2001ء تک اس عہدے پر فائز رہنے والے ہو ایل میک کول کی جگہ سنبھالا۔ لیوس نے 1969ء میں چارلوٹ میں ایک کریڈٹ اینالسٹ کی حیثیت سے نارتھ کیرولائنا نیشنل بینک (NCNB، نیشنز بینک اور بینک آف امریکہ کا پیشرو) میں شمولیت اختیار کی۔ ادارے میں مختلف قائدانہ عہدوں پر فائز رہنے کے بعد انہیں اپریل 2001ء میں بینک آف امریکہ کا چیف ایگزیکٹو آفیسر اور صدر قرار کیا گیا۔

لیوس 1947ء میں میریڈین، مسی سپی میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے اپنی بیچلرز سند جارجیا اسٹیٹ یونیورسٹی سے حااصل کی اور وہ اسٹینفورڈ یونیورسٹی میں ایگزیکٹو پروگرام میں بھی گریجویٹ ہیں۔

لیوس امریکن بینکر نیوز پیپر کا “بینکر آف دی ایئر” ایوارڈ دو مرتبہ (2002ء، 2008ء) حاصل کرنے والی واحد شخصیت ہیں۔ ٹائم میگزین نے 2007ء میں انہیں دنیا کی 100 موثر ترین شخصیات میں سے ایک قرار دیا۔

لیوس کے دور میں بینک آف امریکہ نے لاکھوں نئے صارفین کو اپنی جانب کھینچا اور نئی مالیاتی مصنوعات، خدمات، ڈلیوری چینلز اور ٹیکنالوجیز کی تخلیق کے ذریعے اپنے موجود تعلقات کو وسیع تر بنایا، اور صارفی اطمینان کو بہتر بناتے ہوئے ہر کاروبار میں اہم کامیابی حاصل کی۔ منتخب حصولوں کے ذریعے لیوس نے مالیاتی خدمات کی صنعت کی اہم مارکیٹوں اور شعبہ جات میں مستقبل کی ترقی کے لیے مارکیٹ کے اہم عہدوں اور مواقع کو جمع کیا، جس میں شمال مشرقی اور وسط مغربی امریکہ کی بینکاری مارکیٹیں، نجی بینکاری، کارڈ سروسز، ہوم لینڈنگ، ویلتھ مینجمنٹ اور انوسٹمنٹ بینکنگ شامل ہیں۔

لیوس کی قیادت میں بینک آف امریکہ نے نئے 10 سالہ، قومی سطح کے اہداف برائے کمیونٹی ڈیولپمنٹ لینڈنگ اور انوسٹنگ (1.5 ٹریلین ڈالرز) اور انسان دوست عطیات (2 ارب ڈالرز)، اور 20 ارب ڈالرز کے ماحولیاتی منصوبے کا اعلان کیا جس کا مقصد ایسے اداروں اور ٹیکنالوجی میں سرمایہ کاری کرنا تھا جو دنیا بھر میں ماحولیاتی اور اقتصادی تحفظ پذیری کی تخلیق میں مدد کرے۔

بینک آف امریکہ

بینک آف امریکہ دنیا کے بڑے مالیاتی اداروں میں سے ایک ہے جو انفرادی صارفین، چھوٹے اور درمیانے درجے کےکاروباروں اور بڑے اداروں کو بینکاری، سرمایہ کاری، اثاثہ جات کے انتظام اور دیگر مالیاتی اوررسک مینجمنٹ مصنوعات اور خدمات کی مکمل رینج فراہم کرتا ہے۔ ادارہ امریکہ میں بے مثال سہولیات پیش کرتا ہے جہاں وہ 6000 شاخوں، تقریباً 18700 اے ٹی ایمز کے ذریعے تقریباً 53  ملین صارفین اور چھوٹے کاروباری اداروں کو اور ایوارڈ یافتہ آن لائن بینکاری کے ذریعے 29 ملین سے زائد متحرک صارفین کو خدمات فراہم کرتا ہے۔ بینک آف امریکہ دنیا کی بڑی ویلتھ مینجمنٹ کمپنیوں میں سے ایک ہے اور کارپوریٹ اور انوسٹمنٹ بینکاری اور ٹریڈنگ میں عالمی رہنما کی حیثیت رکھتا ہے جو دنیا بھر میں اثاثہ کے مختلف درجات میں کارپوریشنز، حکومتوں، اداروں اور انفرادی سطح پر افراد کے لیے خدمات انجام دے رہا ہے۔ بینک آف امریکہ جدید، آسان استعمال آن لائن مصنوعات اور خدمات کے مجموعے کے ذریعے 4 ملین سے زائد چھوٹے کاروباری مالکان صنعت کی بہترین سپورٹ پیش کرتا ہے۔ ادارہ 150 سے زائد ممالک میں صارفین کو خدمات فراہم کرتا ہے۔ بینک آف امریکہ کارپوریشن کے حصص (این وائی ایس ای: BAC)  ڈاؤ جونز انڈسٹریل ایوریج کا حصہ ہیں اور نیویارک اسٹاک ایکسچینج میں مندرج ہیں۔

www.bankofamerica.com

ذریعہ: بینک آف امریکہ

رابطہ: سرمایہ کار رابطہ کر سکتے ہیں:

کیون اسٹٹ، بینک آف امریکہ،

+1-704-386-5667،

 

لی میک انٹائر، بینک آف امریکہ،

+1-704-388-6780؛

 

اخباری نمائندگان رابطہ کر سکتے ہیں:

رابرٹ اسٹکلر، بینک آف امریکہ،

+1-704-386-8465،

robert.stickler@bankofamerica.com