یورپی یونین نے سگ ماہیوں سے تیار ہونے والی مصنوعات کی تجارت پر پابندی لگا کر تاریخ رقم کر دی

 

اسٹراسبورگ، 5 مئی/پی آر نیوز وائر-ایشیانیٹ/

سگ ماہیوں کے لیے اس عظیم فتح کا ہیومین سوسائٹی انٹرنیشنل کی جانب سے خیرمقدم

ہیومین سوسائٹی انٹرنیشنل نے سگ ماہیوں (Seal) سے تیار ہونے والی مصنوعات پر سخت پابندیاں عائد کرنے کے حق میں ووٹنگ کرانے پر یورپی پارلیمنٹ سے تشکر کا اظہار کیا ہے۔ ہیومین سوسائٹی انٹرنیشنل/برطانیہ  کے ڈائریکٹر مارک گلوور نے کہا ہے کہ “یورپی پارلیمان میں آج کے ووٹ نے دنیا بھر میں سگ ماہیوں کے تجارتی قتل عام کو روکنے کے لیے مہم کو ایک تاریخی فتح پر ہمکنار کیا ہے۔ یورپی یونین نے اپنے شہریوں کی جانب سے جو فیصلہ کیا ہے وہ لاکھوں سگ ماہیوں کو ہولناک انجام سے بچائے گا۔”

ہیومین سوسائٹی انٹرنیشنل/کینیڈا کی ڈائریکٹر ریبیکا ایلڈورتھ نے کہا کہ “یورپی یونین نے سگ ماہیوں سے تیار ہونے والی مصنوعات کی تجارت کو بند کر کے تاریخ رقم کر دی ہے۔ یہ پابندی کینیڈا کے بدنامِ زمانہ سگ ماہی قتل عام کے خاتمے کا نقطہ آغاز ہے۔”

پارلیمان نے ایک قرارداد کے حق میں ووٹ دیے جو یورپی یونین مارکیٹ میں سگ ماہیوں سے بنی مصنوعات کی فراہمی کا خاتمہ کر دے گی، اس طرح کینیڈا کے تجارتی سگ ماہی قتل عام کے لیے ایک مرکزی مارکیٹ بند ہو رہی ہے۔ کونسل اور کمیشن نے پہلے ہی اس قرارداد کے متن پر رضامندی کا اظہار کیا تھا، اور اس قرارداد کے مقاصد کے حصول کے لیے منگل کوڈالے گئے ووٹ حتمی قدم قرار پائے۔ قراداد کی حمایت میں پارلیمنٹ کی جانب سے بھرپور حمایت کی روشنی میں یہ فیصلہ 2010ء سے قابل عمل ہوگا۔

“یورپی یونین کینیڈا کی سگ ماہی صنعت کی مرکزی مارکیٹ تھی، جہاں ایک تہائی سگ ماہیوں کی کھالیں برآمد کی جاتی تھیں۔” عالمی سطح پر یورپی یونین دنیا بھر کی سگ ماہی مصنوعات کا ایک چوتھائی حاصل کرتا تھا۔

حالیہ چند سالوں میں 11 ممالک نے سگ ماہیوں سے تیار کردہ مصنوعات پر پابندی عائد کی یا اس خواہش کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس مقصد کے لیے امریکہ کا ساتھ دیا جس نے 1972ء میں سگ ماہیوں سے تیار کردہ مصنوعات کی تجارت کو ممنوعہ قرار دیا تھا۔

ٹائم لائن:

– اپریل 2009ء –کینیڈا میں سگ ماہی کے پشم (کھال) کی قیمت گر کر صرف 15 کینیڈین ڈالر رہ گئی – جو 2006ء کے مقابلے میں 86 فیصد کم تھی – جس کا بڑا سبب یورپی یونین کی جانب سے پابندی پر غور تھا۔ نتیجتاً اس کام سے وابستہ کئی افراد نے سگ ماہیوں کے قتل عام میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کیا۔ کوٹے کے 338،200 کے علاوہ اب تک 60،000 سگ ماہیوں کو قتل کیا جا چکا ہے ، جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ ایک چوتھائی ملین سگ ماہیوں کے بچوں کو بھی اس سال ظالمانہ شکار کا نشانہ بنایا گیا۔

– مارچ 2009ء – کینیڈا کے سینیٹر میک ہارب نے کینیڈا کی تاریخ میں پہلی بار تجارتی پیمانے پر سگ ماہیوں کے قتل عام کے خلاف پہلا بل پیش کیا۔

– مارچ 2009ء – امریکی سینیٹ نے ایک قرارداد پیش کی جس میں کینیڈا کی حکومت نے سگ ماہیوں کے شکار کے خاتمے اور یورپی یونین سے سگ ماہیوں سے تیار کردہ مصنوعات کی تجارت پر سخت پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔

– 2006ء –یورپی پارلیمان کے چار سو پچیس اراکین نے یورپی یونین میں سگ ماہیوں کی مصنوعات پر پابندی عائد کرنے کے لیے ایک تاریخی قرارداد پیش کی۔ اسی سال کونسل آف یورپ نے اپنی قرارداد پیش کی جس میں 25 رکن ریاستوں کو سگ ماہیوں کی مصنوعات کی تجارت پر پابندی عائد کرنے کے لیے منصوبوں کو فروغ دینے کا مطالبہ کیا گیا۔

– 2006ء-  کروشیا اور میکسیکو نے سگ ماہیوں سے تیار کردہ مصنوعات کی تجارت پر پابندی عائد کی۔

– گزشتہ دہائی میں – یورپی یونین کی نو رکن ریاستوں نے سگ ماہیوں کی مصنوعات پر پابندی عائد کر دی یا ایسا کرنے کا عندیہ دیا۔

سگ ماہیوں کے قتل عام کے حوالے سے اعداد و شمار:

– کینیڈا میں سگ ماہیوں کا تجارتی پیمانے پر قتل عام زمین پر آبی ممالیہ جانوروں کا سب سے بڑا قتل عام ہے، جس میں لاکھوں جانوروں کو کھالوں کے حصول کے لیے ہر سال قتل کیا جاتا ہے۔

– جانوروں کے ماہرین کام کی صورتحال اور جانوروں کو مارنے کی رفتار کے باعث کینیڈا میں تجارتی پیمانے پر سگ ماہی کے قتل عام کو بے رحمانہ قرار دے چکے ہیں۔

– کینیڈا میں سگ ماہیوں کا تجارتی پیمانے پر قتل عام نیو فاؤنڈ کے جی ڈی پی کا صرف نصف فیصد ہے اور اس میں شریک ہونے والے افراد سالانہ آمدنی کا اوسطاً 5 فیصد سے بھی کم حصہ اس کام سے حاصل کرتے ہیں۔

– کینیڈا کی بڑی آبادی تجارتی پیمانے پر سگ ماہیوں کے اس قتل عام کے خلاف ہے (اینوی رونکس ریسرچ 2005ء) اور بیرون ممالک سے ان سے تیار کردہ مصنوعات پر پابندیاں عائد کرنے کی حمایت کرتی ہے (پولارا 2007ء)۔

ٹوئٹر پر ہمارا تعاقب کیجیے: http://twitter.com/humanesociety

ہیومین سوسائٹی انٹرنیشنل ہیومین سوسائٹی ریاستہائے متحدہ امریکہ کا بین الاقوامی بازو ہے اور جانوروں کے تحفظ کے لیے کام کرنے والی بڑی عالمی انجمنوں میں سے ایک ہے جسے 11 ملین افراد کی حمایت حاصل ہے۔ ایچ ایس آئی تائید، تعلیم اور منصوبوں کے ذریعے جانوروں اور لوگوں کا بہترین مستقبل تخلیق کر رہا ہے۔ جانوروں کے ساتھ خوشی کا اظہار کیجیے اور ظلم کی مخالفت کیجیے، دنیا بھر میں۔ ویب پر ملاحظہ کیجیے hsi.org۔

ذریعہ: ہیومین سوسائٹی انٹرنیشنل

رابطہ: ہیدر سلیوان

+1-240-477-2251

hsullivan@humanesociety.org

یا

کیمائل لیب چوک

+1-613-252-4570

clabchuk@hsi.org