ماہرین کی ٹیم نے ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ میں انرجی سیونگ ریٹروفٹ پروجیکٹ کا اعلان کر دیا

 

نیویارک، 7 اپریل/ پی آر نیوز وائر – ایشیا نیٹ/

توانائی کے استعمال میں 40 فیصد تک کمی کا ہدف، جامع منصوبے کی تکمیل کے لیے دنیا کی معروف ترین دفتری عمارت میں 500 ملین ڈالرز سے زائد کا اپ گریڈ پروگرام

کلنٹن کلائمیٹ انیشی ایٹو (CCI)، روکی ماؤنٹین انسٹیٹیوٹ (RMI)، جانسن کنٹرولز انکارپوریٹڈ (NYSE: JCI) (JCI) اور جونز لینگ لا سیل (NYSE: JLL) (JLL) پر مشتمل عالمی معیار کے ماحولیاتی مشیران، غیر سرکاری اداروں، ڈیزائن اور تعمیراتی شراکت داروں نے ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کو بطور معیار و مثال استعمال کرتے ہوئے آج ماحولیاتی تحفظ پذیری کے لیے موجود عمارتوں کے تجزیے و اُن میں تبدیلی کے جدید عمل کا اعلان کیا ہے۔

دنیا کی اِس معروف ترین دفتری عمارت پر جاری 500 ملین ڈالرز سے زائد کے اپ گریڈ پروگرام کے بنیادی عناصر کی حیثيت سے تسلیم کیا گیا یہ منصوبہ پہلی جامع پیشرفت ہے جو توانائی کو زیادہ موثر انداز میں استعمال کرنے کے کئی اقدامات کو شامل کرے گی۔ یہ پروگرام ممکنہ طور پر توانائی کے استعمال میں 38 فیصد تک کمی لائے گا اور دنیا بھر میں مماثل منصوبوں کے لیے قابلِ تقلید مثال فراہم کرے گا۔ سسٹمز کی تعمیرات پر کام کا آغاز پہلے ہی ہو چکا ہے جو جدول کے مطابق 2010ء کے اختتام تک مکمل ہوگا۔ مکینوں کے مقامات پر کام 2013ء کے اختتام تک مکمل ہو جانا چاہیے۔ 18 ماہ کے اندر مکمل ہونے کے ہدف کی تکمیل کے بعد یہ کام توانائی کی 50 فیصد سے زائد ممکنہ بچت کے نتائج دے گا۔ جبکہ مکینوں کے لیے کام مزید 36 ماہ میں 2013ء تک مکمل ہوگا۔

یہ منصوبہ عمارتوں میں توانائی کی بچت میں ڈرامائی اضافہ کرنے کے لیے تبدیلی لانے کے منصوبوں (ریٹروفٹ پروجیکٹس) کی صلاحیتوں کو ثابت کرے گا اور معقول منافع جاتی ادوار اور بہتر منافع بخشی کے ساتھ اس کے مجموعی کاربن اخراج کو کم کرے گا۔

منصوبے کے عملِ وضاحت کی تکمیل کے بعد ٹیم نے ایمپائر اسٹیٹ ری بلڈنگ پروگرام کے حصے کے طورپر اقدامات کا جائزہ لیا جس میں موجودہ  USGBC LEED ریٹنگ نظام کے بنیادی ڈھانچے کے دائرہ کار کے اندر تحفظ پذیری کی جانب پیشرفت کے لیے دیگر اقدامات بھی شامل تھے۔ داخلی حسابات نے ظاہر کیا کہ ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ موجودہ عمارات کے لیے لیڈرشپ اِن انرجی اینڈ انوائرومینٹل ڈیزائن (LEED) کی طلائی سند (گولڈ سرٹیفکیشن) کے لیے حاصل کرنے کے قابل ہو جائےگا اور مالک اس سند کے حصول کے لیے بے تاب دکھائی دیتے ہیں۔

عمارت کی مالک ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کمپنی کے انتھونی ای مالکن نے کہا کہ “دنیا بھر کے شہروں میں کاربن کے اخراج و اثرات کی بڑا سبب تجارتی و رہائشی عمارات ہیں اور نیویارک شہر میں تو یہ تناسب 70 فیصد سے زائد ہے۔ توانائی کے استعمال اور ماحولیاتی اثرات کو کم کرنے کے لیے ایک قابلِ تقلید عمل کی تخلیق کے لیے فروری 2008ء سے ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ ایک تجرباتی مقام بنی ہوئی ہے۔ بیشتر جدید عمارات ماحول کو ذہن میں رکھ کر تعمیر کی جاتی ہیں لیکن حقیقی ترقی کی اصل کلید عمارت کے توانائی کے خرچ اور کاربن اثرات کو کم کرنا ہے۔”

مالکن کے مطابق “ایک مکمل پروگرام کی خاکہ بندی اور تنظیم کے لیے نئی تکنیکی متعارف کرانے والا یہ جدید عمل دنیا بھر میں اختیار کیے جانے کے لیے ایک واضح راستہ متعین کرتا ہے جو گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج میں بہت زیادہ کمی کا باعث ہوگا۔ کوڑے اور تعمیراتی ملبے کو دوبارہ قابل استعمال بنانے (ری سائیکل کرنے)، دوبارہ قابل استعمال کیے گئے مواد کے استعمال اور ماحول دوست صفائی اور کیڑے مار مصنوعات کے لیے دیگر اقدامات کے ساتھ ساتھ ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ پر تعمیر کیا گیا ماڈل توانائی کے استعمال اور ماحولیاتی اثرات میں کمی کی رفتار میں تیزی لائے گا اور زیادہ ماحول دوست کام کی سہولت دے گا جبکہ منافع بخشی میں اضافے اور مکینوں کے آرام کا باعث بھی بنے گا۔ یہ ایک حقیقی پروگرام ہے، جو حقیقتا وقوع پذیر ہو رہا ہے اور حقیقی ماحول دوست روزگار تخلیق کر رہا ہے۔”

منصوبے کے شراکت داروں نے ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کا جائزہ لینے اور اس کی توانائی کے مکمل ادراک کے ساتھ ساتھ عملیاتی صلاحیتوں اور خامیوں کا جائزہ لینے کے نئے اور قابلِ تکرار عمل میں خاکہ بندی (ماڈلنگ)، پیمائش اور منصوبے کے لیے موجودہ اور نو تخلیق شدہ ٹولز استعمال کیے۔ اس طریقے نے قابل عمل تجاویز کے ساتھ موثریت میں اضافے کے لیے کم خرچ طریقہ پیش کیا، وہ بھی بغیر نتائج کی کارکردگی کو نقصان پہنچائے بغیر۔ 60 سے زائد اختیاری سرگرمیوں پر نظر ثانی کے دوران ٹیم نے آٹھ اقتصادی طور پر قابلِ عمل منصوبوں کو شناخت کیا جو عمارت کی سطح پر تعمیرِ نو، برقی و ہواداری کے نظام میں بہتری اور مکینوں کی جگہوں کے الگ الگ معائنے پر قابل ہوگا اور ماحولیاتی اور مالیاتی دونوں اعتبار سے سرمایہ کاری پر کثیر آمدنی فراہم کرے گا۔

کلنٹن کے صدر نے کہا کہ “مشکل اقتصادی صورتحال میں یہ شہروں اور عمارتوں کے مالکان کے لیے زبردست موقع ہے کہ وہ اپنے پیسے اور توانائی کو بچانے کے لیے موجودہ عمارات میں تبدیلی لائیں۔ میں نیویارک سمیت دنیا کے 40 بڑے شہروں میں اپنے ادارے کے منصوبوں پر فخر محسوس کرتا ہوں، جن میں سے نیویارک میں ہم نےشراکت داروں کے ایک بے مثال گروہ کے ساتھ مل کر مرکزی کردار ادا کیا جو ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ ریٹروفٹ پروجیکٹ کو ممکن بنانے کے لیے کام کر رہے ہیں۔ جدید انداز کا یہ تعاون اپنے سیارے کو محفوظ رکھنے اور معیشت کو دوبارہ اپنے پیروں پر کھڑا کرنے اور رواں کرنے کے لیے ضروری ہے۔”

پروگرام کی انرجی سروسز کمپنی کے طور پر کام کرنے والے ادارے جانسن کنٹرولز کے نائب صدر این کیمبل نے کہا کہ “یہ منصوبہ اِس شعبے میں ہمارے 125 سال تک حاصل کردہ تجربے، تحقیق اور جدت کے ہر زاویے کا حامل ہے۔ جس طرح ہم اس شاندار عمارت کو اپنے بزرگوں کا عظیم ترین کارنامہ قرار دیتے ہیں اسی طرح یہ بات قابل مسرت ہے کہ ہمارے بعد آنے والی نسلیں ہمارے لیے بھی ایسے ہی جذبات رکھیں گی۔”

جونز لینگ لا سیل کے انٹرنیشنل ڈائریکٹر ریمنڈ کوارٹارارو نے کہا کہ “یہ منصوبہ نہ صرف ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کے ماحولیاتی اثرات کو کم کرے گا بلکہ اب ہم اس طریقہ سے اس طرح چلانے کے قابل ہیں جو عمارت کے ساتھ ساتھ کے اس مکینوں کے اخراجات میں بھی کمی کا باعث بنے۔”

منصوبے کا ابتدائی تخمینہ 20 ملین ڈالرز ہے جبکہ عمارت کے اپ گریڈ پروگرام میں اضافی بچت اور اخراجات کو نئی سمت دکھانا بھی عمارت کے اپ گریڈ پروگرام کے منصوبے میں شامل کی گئی، اور مکینوں کی تنصیبات میں اضافی متبادل اخراجات کے ذریعے ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ توانائی کی بچت پر اخراجات میں سالانہ 4.4 ملین ڈالرز بچائے گي، اپنے توانائی کے استعمال میں تقریباً 40 فیصد کمی لائے گی، خالص اضافی خرچ تقریباً تین سال میں چکا دے گی اور آٹھ کلیدی منصوبوں کے ذریعے مجموعی کاربن اخراجات میں کمی کرے گی، جس میں شامل ہیں:

1۔ کھڑکیوں سے روشنی آنے کے عمل میں تبدیلی: تقریباً 6500 تھرموپین شیشے کی کھڑکیوں کی صفائی، گرمیوں میں اضافی حرارت اور سردیوں میں حرارت کی کمی دونوں کو متوازن کرنے کے لیے موجودہ شیشے اور شیشے دار کھڑکیوں پر تہری سطح کے علیحدہ پینلوں کا استعمال

2۔ آلہ حرارت کی محدودیت میں تبدیلی: حرارت کے اخراج کو کم کرنے اور عمارتی محیط میں موثر انداز میں حرارت پہنچانے کے لیے آلہ حرارت کے پیچھے اضافی محدودیت

3۔ مکینوں کے لیے روشنی، دن کی روشنی اور پلگ اپ گریڈز: بجلی کے اخراجات اور سردیوں کے دباؤ کو کم کرنے کے لیے روشنی کے زیادہ بہتر ڈیزائنوں، دن کی روشنی کی تنظیم اور عمومی حصوں اور مکینوں کی جگہوں میں پلگ لوڈ ایکوپنسی سینسرز کی تنصیب

4۔ ہوا کے لیے تبدیلی: پنکھوں کو چلانے کے لیے متغیر فریکوئنسی کے ساتھ ایئر ہینڈلنگ یونٹوں کی تبدیلی، انفرادی مکینوں کے لیے آرام کے ساتھ ساتھ کام میں توانائی کی زیادہ بہتر بچت۔

5۔ چلر پلانٹ میں تبدیلی: چلر کی کارکردگی اور کنٹرول کرنے کی صلاحیت کو بہتر بنانے کے لیے “گٹس” نکالنے اور نئے لگانے کے ذریعے موجودہ چلر شیلز کا دوبارہ استعمال میں لانا، متغیر فریکوئنسی کی ڈرائیوز متعارف کرانا بھی شامل۔

6۔ مکمل عمارتی کنٹرول سسٹم اپ گریڈ: HVAC آپریشن کو آپٹمائز کرنے اور ساتھ ساتھ زیادہ تفصیلی سب-میٹرنگ معلومات فراہم کرنے کے لیے موجودہ عمارتی کنٹرول نظام کی اپ گریڈ۔

7۔ ہواداری کنٹرول اپ گریڈ: بند حصوں میں ہوا کے معیار کو بہتر بنانے اور باہر کی ہوا کے ماحول کے لیے درکار توانائی کو کم کرنے کے لیے ہوا داری کو کنٹرول کرنے کے نظام کی پیشکاری۔

8۔ مکینوں کے لیے توانائی کو منظم کرنے کے نظام: بجلی کے استعمال کو زیادہ موثر بنانے کے لیے ہر مکین کے لیے انفرادی سطح پر ویب کی بنیاد پر تیار کردہ بجلی کے استعمال کے نظام پیش کرنا۔

حال ہی میں متعدد منصوبے پیش کیے گئے ہیں، جن میں 2007ء میں سی سی آئی بلڈنگ ریٹروفٹ پروگرام اور نیویارک شہر کا PlaNYC شامل ہیں، جن کا مقصد بڑے شہروں میں موجودہ عمارات کے کثیر کاربن اثرات کو کم کرنا ہے۔ آج ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ میں جاری ہونے والا پائلٹ پروگرام نظری و سمتی اقدام سے قابلِ تعین عملی منصوبوں کی جانب پیشرفت ہے جو دنیا بھر میں بڑے پیمانے پر اپنایا جا سکتا ہے۔ کلنٹن کلائمیٹ انیشی ایٹو، جانسن کنٹرولز انکارپوریٹڈ اور جون لانگ لا سیل، روکی ماؤنٹین انسٹیٹیوٹ اور عمارت کی مالک ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کمپنی کے آج اعلان کردہ حقیقی اقدامات اب عالمی برادری کے ذمہ دار اراکین کے لیے اقتصادی طور پر شاندار راہ کی عملی مثال ہیں۔ یہ منصوبہ مثبت تبدیلی کے لیے منصوبوں کی نتیجہ خیزی دنیا بھر میں شہروں، ریاستوں اور حکومتوں کے اعتماد میں اضافہ کر سکتا ہے۔

روکی ماؤنٹین انسٹیٹیوٹ کے چیئرمین اور چیف سائنسدان اموری بی لووِنز نے کہا کہ “شہروں کو زیادہ صاف ستھرا اور زیادہ توانائی بچانے والا بنانے کے لیے ہمیں فوری طور پر ایسے قابلِ تقلید نمونے کی ضرورت ہے جو موجودہ بڑی عمارات میں تبدیلیاں لا کر انہیں بہتر بنا سکے۔ یہ خیالی مثال کاربن اخراجات میں کمی، توانائی اور پیسے کی بچت، روزگار کے مواقع تخلیق کرنے اور دنیا بھر کی عمارات میں کام کے لیے بہتر جگہیں فراہم کرنے کے لیے معلومات اور متاثر کرنے میں منصوبوں کو مدد دے گی۔”

مکمل تجزیاتی عمل عوام کے استعمال کے لیے آزاد-مصدر مواد کے طور پر www.esbsustainability.com اور www.esbnyc.com پر آن لائن موجود ہے ۔

مزید معلومات کے لیے ایڈم پیٹرالا (212-704-8176 ، adam.pietrala@edelman.com)سے یا ویت این گویُن (212-704-4535، viet.n’guyen@edelman.com ) سے رابطہ کیجیے۔

کلنٹن کلائمیٹ انیشی ایٹو کے بارے میں

ولیم جے کلنٹن فاؤنڈیشن نے موسمیاتی تبدیلی کا باعث بننے والے بنیادی عوامل کے لیے حل تخلیق کرنے اور مزید آگے بڑھانے کے لیے کلنٹن کلائمیٹ انیشی ایٹو (CCI) قائم کی۔ مقامی ضروریات کے اعتبار سے تبدیل شدہ اقتصادی و ماحولیاتی دوست حل پیش کرنے کے لیے دنیا بھر میں حکومتوں اور کاروباری اداروں کے ساتھ مل کر کام کرنے والا سی سی آئی تین اہم پروگرام پر نظریں مرکوز رکھتا ہے: شہروں میں توانائی کی موثریت کو بڑھانا، صاف توانائی کی بڑے پیمانے پر فراہم کا محرک بننا، اور جنگلات کی جانب سے جذب کردہ کاربن کا اندازہ و قدر لگانا۔ سی سی آئی ان میں سے ہر پروگرام میں گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کے بڑے ذرائع سے نمٹنے اور ان پر اثر انداز ہونے والے افراد، پالیسیوں اور عمل تک مکمل رسائی استعمال کرتا ہے۔ سی سی آئی گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج میں کمی کے لیے کوششوں میں اضافے کے عہد میں بندھے دنیا بھر کے بڑے شہروں کی تنظیم C40 کے عملی بازو کی حیثیت سے خدمات انجام دیتا ہے۔ نیویارک بھی اس تنظیم کا رکن ہے۔ کلنٹن کلائمیٹ انیشی ایٹو اور ولیم جے کلنٹن فاؤنڈیشن کے کاموں کے بارے میں مزید معلومات کے لیے www.clintonfoundation.org ملاحظہ کیجیے۔

رابطہ: press@clintonfoundation.org

جانسن کنٹرولز کے بارے میں

جانسن کنٹرولز (NYSE: JCI) ایک عالمی رہنما ہے جو افراد کے قیام، کام اور سفر کے مقامات میں خوش طبعی لاتا ہے۔ ٹیکنالوجی، مصنوعات اور خدمات کو یکجا کر کے ہم بہتر ماحول تخلیق کرتے ہیں جو افراد اور ان کے گرد و نواح کے درمیان تعلقات کو نئی جہت دیتا ہے۔ 140،000 ملازمین پر مشتمل ہماری ٹیم 200 ملین سے زائد گاڑیوں، 12 ملین گھروں اور ایک ملین کمرشل عمارات کے لیے اپنی مصنوعات اور خدمات کے ذریعے زیادہ آرام دہ، محفوظ اور ماحول دوست دنیا تخلیق کرتی ہے۔ ماحول دوستی سے ہماری وابستگی ماحولیاتی داروغگی (اسٹیورڈ شپ)، کام کے مقامات اور ارد گرد اچھی کارپوریٹ سٹیزن شپ اور صارفین کے لیے ہماری پیش کردہ مصنوعات اور خدمات کی محرک ہے۔ اضافی معلومات کے لیے ملاحظہ کیجیے http://www.johnsoncontrols.com۔

رابطہ: کیری فسٹرر، 414-524-4017، Kari.B.Pfisterer@jci.com

جونز لینگ لاسیل کے بارے میں

جونز لینگ لا سیل (NYSE: JLL) رئیل اسٹیٹ کے شعبے میں مہارت کی حامل ایک مالیاتی و پیشہ وارانہ خدمات کی فرم ہے۔ ادارہ رئیل اسٹیٹ کے شعبے میں ملکیت حاصل کرنے، رہائش اختیار کرنے یا سرمایہ کاری کرنے میں زیادہ بہتری حاصل کرنے کے خواہشمند صارفین کو اپنی دنیا بھر میں اپنی ماہر ٹیموں کے ذریعے مکمل خدمات فراہم کرتا ہے۔ 2008ء میں 2.7 ملین ڈالرز کی کی عالمی آمدنی کا حامل جونز لینگ لاسیل دنیا بھر کے 60 ممالک میں 750 سے سے زائد مقامات پر صارفین کو خدمات فراہم کرتا ہے، ان مقامات میں 180 کارپوریٹ دفاتر بھی شامل ہیں۔ فرم پراپرٹی اور کارپوریٹ فیسلٹی مینجمنٹ سروسز میں صنعت کے رہنما کی حیثیت رکھتی ہے، جس کے پورٹ فولیو میں دنیا بھر کا تقریباً 1.4 ارب مربع فٹ شامل ہے۔ ادارے کا سرمایہ کاری کی منتظمیت کا شعبہ لاسیل انوسٹمنٹ مینجمنٹ دنیا کا سب سے بڑا اور رئیل اسٹیٹ کا متنوع ترین ادارہ ہے جو اپنے زیر انتظام 46 ارب ڈالرز کے اثاثہ جات رکھتا ہے۔ مزید معلومات کے لیے ہماری ویب سائٹ www.joneslanglasalle.com ملاحظہ کیجیے۔

رابطہ: کریگ بلوم فیلڈ، (312) 228-2774، Craig.Bloomfield@am.jll.com

روکی ماؤنٹین انسٹیٹیوٹ کے بارے میں

501 (ڀسی) (3) غیر منافع بخش ادارہ روکی ماؤنٹین انسٹیٹیوٹ (آر ایم آئی) 1982ء میں ریسورس اینالسٹ ایل ہنٹر لووِنز اور ایموری بی لووِنز نے قائم کیا۔ توانائی پالیسی پر نظریں رکھنے والے چند ساتھیوں پر مشتمل ایک چھوٹے سے گروپ سے آغاز کرنے والا یہ ادارہ اب ایک وسیع ادارے کی صورت اختیار کر چکا ہے جس کے 80 کل وقتی عملے کے اراکین ہیں، وہ تقریباً 12 ملین ڈالرز کا سالانہ میزانیہ (بجٹ) (جس کا نصف سے زائد پروگرامیٹک انٹرپرائز سے حاصل کیا جاتا ہے) اور عالمی سطح پر رسائی کا حامل ہے۔

رابطہ: جوش بیرن، 212-584-5000، josh@fenton.com

ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کے بارے میں

“دنیا کی معروف ترین دفتری عمارت” دی ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ 500 ملین ڈالرز سے زائد کے امپائر اسٹیٹ ری بلڈنگ پروگرام کا مرکز ہے جو ڈبلیو اینڈ ایچ پراپرٹیز کے قبل از جنگ ٹرافی دفتری عمارات کے پورٹ فولیو کا پرچم بردار پروگرام ہے۔ 2007ء میں ایمپائر اسٹیٹ ری بلڈنگ پروگرام کے آغاز سے اب تک بنیادی ڈھانچے، عوامی مقامات اور آسائش و سہولیات میں نئی سرمایہ کاری نے دنیا بھر متنوع قسم کے نئے اور اول درجہ کے مکینوں کو اپنی جانب کھینچا ہے۔ اس فلک شگاف عمارت کے جدید نشریاتی پلیٹ فارم نے اسے دنیا کی اہم ترین مارکیٹ میں اہم ترین نشریاتی تنصیب کی حیثيت دی ہے۔ امریکہ کے ماہرین تعمیرات کے ادارے American Institute of Architects کی جانب سے کرائے گئے ایک پول میں ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کو امریکہ کی پسندیدہ ترین عمارت قرار دیا گیا تھا۔ ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کی آبزرویٹری خطے کا اول نمبر سیاحتی مقام ہے۔ ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ کے بارے میں مزید معلومات کے لیے دیکھیے www.esbnyc.com۔

رابطہ: ایڈم پیٹرالا، 212-704-8176، adam.pietrala@edelman.com، ویت این گویُن، 212-704-4535، viet.n’guyen@edelman.com

ذریعہ: ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ

رابطہ: ایڈم پیٹرالا، +1-212-704-8176، adam.pietrala@edelman.com، یا

ویت این گویُن، +1-212-704-4535، viet.n’guyen@edelman.com،

دونوں برائے ایمپائر اسٹیٹ بلڈنگ

رابطہ: کیری فسٹرر، جانسن کنٹرولز، +1-414-524-4017،

Kari.B.Pfisterer@jci.com؛

 

رابطہ: کریگ بلوم فیلڈ، جونز لینگ لاسیل، +1-312-228-2774،

Craig.Bloomfield@am.jll.com؛

 

رابطہ: جوش بیرن، +1-212-584-5000،

josh@fenton.com،

برائے روکی ماؤنٹین انسٹیٹیوٹ؛

 

کلنٹن کلائمیٹ انیشی ایٹو، press@clintonfoundation.org